سانحہ یوحنا آباد، سینئرسول جج کا بیان قلمبند، سماعت ملتوی

سانحہ یوحنا آباد، سینئرسول جج کا بیان قلمبند، سماعت ملتوی

لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالت نے یوحنا آباد میں ہنگامہ آرائی کے دوان دو افراد کو زندہ جلا کر ہلاک کرنے کے کیس کی سماعت 2روز تک ملتوی کردی۔انسداد دہشت گردی کی عدالت میں تھانہ نشتر کالونی پولیس نے دو افراد نعیم اور بابر کو زندہ جلا کر ہلاک کرنے کے الزام میں چالان پیش کررکھا ہے ،عدالت میں روزانہ کی بنیاد پر کیس کی سماعت کی جا رہی ہے۔عدالت میں سینئرسول جج چودھری ظفراقبال کا بیان قلمبند کیے جانے پر ملزمان کے وکلا ء نے سینئرسول جج پر اپنی جرح مکمل کی جبکہ سول جج شہزاد ہمدانی پر بھی وکلا ء نے اپنی جزوی جرح کی ،مزید جرح کے لئے عدالت نے وکلا ء کو دوبارہ پابند کردیاہے۔اس کیس میں 42ملزمان نامزد ہیں جن میں ایک ملزم کا جیل میں انتقال ہونے پر اب ملزمان کی تعداد 41رہ رگئی ہے۔ملزمان پر الزام ہے کہ انہوں نے یوحنا آباد میں بم دھماکے کے بعد علاقے میں ہنگامہ آرائی کی اور دو افراد کوبے دردی سے زندہ جلا کرہلاک کردیا تھا جس پر تھانہ نشتر کالونی میں ملزموں کے خلاف مقدمہ درج کررکھا ہے ۔

مزید : علاقائی