دہشتگردوں کیخلاف بلا امتیاز کارروائیاں جاری :پاکستان ،مزید اقدامات کرناہوں گے :امریکہ

دہشتگردوں کیخلاف بلا امتیاز کارروائیاں جاری :پاکستان ،مزید اقدامات کرناہوں ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے کہا ہے دہشت گردی اور انتہا پسندی کیخلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں سے آگاہ ہیں۔وزیراعظم ہاؤس میں ہونیوالی ملاقات میں وزیر دفاع خرم دستگیر، وزیر خارجہ خواجہ آصف، مشیر قومی سلامتی لیفٹیننٹ (ر) نا صر خان جنجوعہ اور ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل ندیم مختار نے بھی شرکت کی۔امریکہ کی جانب سے ملاقات میں وزیر دفاع جیمز میٹس کے ہمراہ پاکستان میں امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل اور افغانستان میں امریکی فوجی جنرل بھی موجود تھے۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس کی ملاقات کا اعلامیہ جاری کر دیا گیا ہے جس کے مطابق امریکی وزیر دفاع کے دورے کا مقصد پاکستان سے طویل مد تی تعلقات کو آگے بڑھانا اور دونوں ممالک کے درمیان مثبت و مسلسل تعلقات کیلئے مشترکہ راہ تلاش کرنا ہے۔جیمز میٹس نے کہا پاکستان کی مسلح افواج کی پیشہ وارانہ صلاحیتیں قابل تحسین اور دہشتگردی و انتہا پسندی کیخلاف جنگ میں پاکستان کی قربانیوں سے آگاہ ہیں۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا دہشت گردی کے خاتمے اور خطے میں امن و استحکام کیلئے دو طرفہ تعاون کو بڑھانا ہو گا جبکہ افغانستان میں امن کا سب سے زیادہ فائدہ پاکستان کو ہو گا۔قبل ازیں ذرائع نے بتایا ملاقات میں امریکی حکام نے جنوبی ایشیا کے حوالے سے اپنی نئی پالیسی کو و ا ضح کیا جبکہ پاکستانی حکام کی جانب سے خطے کی سلامتی کے حوالے سے اپنا مؤقف کھل کر بیان کیا گیا۔پاکستانی قیادت کی جانب موقف ا پنا یا گیا پاکستان تمام دہشت گردوں کیخلاف بلا امتیاز کارروائیاں کر رہا ہے جبکہ دہشت گردی کیخلاف پرعزم، متحد ہو کر لڑنا ضروری ہے ۔ ذ ر ا ئع کا کہنا تھا پاکستانی حکام کی جانب سے امریکی وزیر دفاع کو دہشتگردوں کیخلاف جاری آپریشنز پر تفصیلی بریفنگ دی گئی اورپاک افغان سرحد محفوظ بنانے کے اقدامات سے آگاہ کیا، ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ پاکستانی حکام کی جانب سے کہا گیا پاکستان کی سکیورٹی فورسز نے دہشت گردوں کی کمر توڑ دی ہے ،دوسری جانب امریکی حکام نے دہشت گردوں کیخلاف پاکستانی اقدامات کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا خطے میں امن و سلامتی کیلئے پاکستان کو آگے بڑھ کر مزید اقدامات کرنا ہوں گے۔ملاقات میں امریکہ کی نئی جنوبی ایشیائی پالیسی کے امور زیر غور آے جبکہ پاکستان نے خطے کی سلامتی کے حوالے سے اپنا مؤقف کھل کر بیان کیا۔ذرائع کے مطابق پاکستانی قیادت سے ملاقات کے دوران امریکی وزیر دفاع علاقائی سلامتی، امن، افغان تنازعے اور دوطرفہ امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔پاکستان کی سول اور عسکری قیادت نے امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس سے ملاقات کے دوران واضح موقف اپناتے ہوئے کہا ہے تمام دہشت گردوں کیخلاف بلا امتیاز کا ر ر و ا ئیا ں کی جا رہی ہیں۔ امریکی وزیردفاع نے شام کو جی ایچ کیو راولپنڈی میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے بھی ملاقات کی اور وہیں سے واپسی کیلئے ائیر پو رٹ روانہ ہوگئے۔ قبل ازیں امریکی وزیر دفاع اپنے21 رکنی وفدکے ہمراہ ایک روزہ دورہ پر اسلام آباد پہنچے تو ان کا سرد ا ستقبال کیا گیا۔ جیمز میٹس کے استقبال کیلئے ان کے پاکستانی ہم منصب سمیت کوئی وزیر بھی موجود نہیں تھا اور نور خان ایئر بیس پر وزارت دفا ع و خارجہ کے حکام نے ان کا استقبال کیا۔ خیال رہے امریکی وزیر دفاع کا یہ پہلا دورہ پاکستان ہے، اس سے قبل امر یکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن نے 24 اکتوبر کو پاکستان کا دورہ کیا تھا۔ امریکی وزیر دفاع مشرق وسطیٰ، مغربی افریقا اور جنوبی ایشیاء کے 5 روزہ دورے پر ہیں اور وہ مصر کے بعد اردن اور گزشتہ روز پاکستان پہنچے۔پاکستان آمد سے قبل مصر میں صحافیوں سے گفتگو میں جیمز میٹس کا کہنا تھا پا کستا ن کیساتھ مل کر دہشت گرد تنظیموں اور گروہوں کیخلاف کارروائی چاہتے ہیں، پاکستان جانتا ہے دہشت گردی سے کیسے نمٹا جائے۔

پاکستان ، امریکہ

مزید : کراچی صفحہ اول