صحافیوں پر پولیس تشدد کا حکومت نوٹس لے گی :اسد قیصر

صحافیوں پر پولیس تشدد کا حکومت نوٹس لے گی :اسد قیصر

پشاور (نیوز رپورٹر) خیبر پختونخوا اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی صدارت میں شروع ہوا سپیکر نے ارکان اسمبلی کی رخصت کی درخواستیں نمٹا دیں سپیکر اسد قیصر نے رواں اجلاس کے لئے مسند نشین حضرات کے ناموں کا اعلان کیا جو باالترتیب حاجی زرین گل ،وجیح الزمان خان ،یاسین خان خلیل اور راجہ فیصل زمان ہوں گے سپیکر اسد قیصر نے رواں اجلاس کیلئے ڈپٹی سپیکر ڈاکٹر مہر تاج روغانی کی سربراہی میں پیٹیشن کمیٹی کے ناموں کا اعلان کیا جو باالترتیب وجیح الزمان خان ،یاسین خان خلیل ،ضیاء اللہ بنگش ،محمود جان ،محمد عارف اور میڈم نسیم حیات شامل ہیں صوبائی وزیر قانون وپارلیمانی امور امتیاز شاہد قریشی نے وزیر اعلیٰ کی جانب سے خیبر پختونخوا وائلڈ لائف اینڈ بائیو ڈائیورسٹی (پروٹیکشن ،پریزرویشن کنزرویشن اینڈ منیجمنٹ ) ترمیمی بل 2017ء ایوان میں پیش کیا صوبائی وزیر قانون وپارلیمانی امور امتیاز شاہد قریشی ایڈوکیٹ نے وزیر صحت کی جانب سے خیبر پختونخوا میڈیکل انسٹی ٹیوشنز ریفارمز (ترمیمی) بل 2017ء ایوان میں پیش کیا پریس گیلری سے صحافیوں نے تھانہ فقیر آباد کے ایس ایچ او کی جانب سے ایک میڈیا نمائندے کو زدوکوب کرنے اور اس کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کیخلاف احتجاجاً واک آؤٹ کرگئے سپیکر کی ہدایت پر سینیئروزیر عنایت اللہ خان نے جاکر انہیں منایا اور واپس پریس گیلری میں لے آئے بعد ازاں ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے سینئر وزیر عنایت اللہ خان نے کہا کہ حکومت اس کا سختی سے نوٹس لے گی وہ خود بھی آئی جی پی سے بات کریں گے انہوں نے سپیکر سے کہا کہ اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب سے بھی محکمہ پولیس کو اس حوالے سے ایک لیٹر بھیجیں،ارکان اسمبلی اے این پی کے میاں جعفر شاہ ،مسلم لیگ ن کے پارلیمانی لیڈر سردار اورنگزیب نلوٹھا ،قومی وطن پارٹی کے پارلیمانی لیڈر سکندر حیات شیر پاؤ نے بھی واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے اس کی تحقیقات پر زور دیا اور نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کا جائزہ لینے کا بھی مطالبہ کیا ،جے یو آئی ف کے مفتی سید جنان نے بھی موضوع پر بحث میں حصہ لیا اور دہشتگردی کیخلاف جنگ میں خیبر پختونخوا کے عوام ،تاجروں ،سرکاری اہلکاروں اور سیکورٹی فورسز کی قربانیوں کا تفصیل سے ذکر کیا اور کہا کہ ایک دوسرے کو شک کی نگاہ سے دیکھنے کی بجائے حسد ،بغض اور نفرتیں دلوں سے نکال کر ایک ہونا ہوگا تب جاکر ہم اس دہشتگردی کے ناسور کو ختم کرنے میں کامیاب ہوں گے ،پی پی پی کے فخر اعظم وزیر نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا کہ دہشتگردی کیخلاف جنگ کے سلسلے میں صوبہ خیبر پختونخوا کو ملنے والے فنڈز میں اضافہ کرے ،اے این پی کے پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے بھی دہشتگردی کے واقعے کی بھر پور مذمت کی اور کہا کہ بدقسمتی سے دہشتگردی کا سلسلہ رکتا نہیں اور دوسری بدقسمتی یہ ہے کہ ریاستی ادارے بھی باہمی اختلافات کا شکار ہیں صوبائی وزیر قانون وپارلیمانی امور امتیاز شاہد قریشی نے دہشتگردی کے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے اسے بزدلانہ کارروائی قرار دیا شہداء کے خاندانوں سے ہمدردی کا اظہار کیا اور سیکورٹی فورسز کی بروقت کارروائی پر پولیس اور فوج کو خراج تحسین بھی پیش کیا جماعت اسلامی کے رکن اعزاز الملک افکاری نے بھی واقعہ کی شدید مذمت کی انہوں نے کہا کہ سرحدوں پر کروڑوں کی لاگت س باڑھ لگ گئی ہے پھر بھی دہشتگرد آسانی سے آرہے ہیں سینئر وزیر برائے بلدیات ودیہی ترقی عنایت الل خان نے بحث سمیٹتے ہوئے سپیکر کی اس تجویز سے اتفاق کیا کہ تحریک التواء کے ذریعے اس معاملے کو تفصیلی بحث میں لایا جائے رکن اسمبلی محمود جان نے گنے کے کاشتکاروں کے مسائل ایوان میں اٹھاتے ہوئے کہا کہ ہر سال 5 نومبر کو کرشنگ سیزن شروع ہوتا ہے مگر آج 4 دسمبر ہے اور شوگر ملز مالکان نے یہ شروع نہیں کیا جس کے باعث کاشتکاروں کو مشکلات درپیش ہیں ،ایوان نے رکن اسمبلی صاحبزادہ ثناء اللہ کی قرار داد اتفاق رائے سے منظور کی جس میں مطالبہ کیا گیا تھا کہ روز گار کیلئے سعودی عرب میں مقیم پاکستانیوں کی پکڑ دھکڑ اور جیلوں میں ڈھالنے کے واقعات اور گرفتار افراد کی رہائی کیلئے وفاقی سطح پر اقدامات اٹھائے جائیں ،قومی وطن پارٹی کی خاتون رکن معراج ہمایون نے خواتین پر تشدد کے واقعات کی مذمت کی اور باالخصوص ڈیرہ اسماعیل خان کے واقع کے واقعہ کا ذکر کیا اور کہا کہ اس پر بحث کی ضرورت ہے سپیکر نے اجلاس بدھ کی سہ پہر 3 بجے تک کیلئے ملتوی کردیا ۔

مزید : کراچی صفحہ اول