تخت بھائی،فلائی اوور کی تعمیر پر دوبارہ کام شروع کرنے کیلئے 20دسمبر کی ڈیڈ لائن

تخت بھائی،فلائی اوور کی تعمیر پر دوبارہ کام شروع کرنے کیلئے 20دسمبر کی ڈیڈ ...

تخت بھائی(نامہ نگار) تخت بھائی سٹی کے منتخب بلدیاتی نمائندوں نے فلائی اوور سروس روڈ کی عدم تعمیر پر شدید غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے این ایچ اے اور دیگر متعلقہ حکام کو 20دسمبر تک ڈیڈ لائن اور مطالبات تسلیم نہ ہونے کی صورت میں شاہراہ ملاکنڈ و فلائی اوور کوہر قسم ٹریفک کے لیے بند کرنے کا اعلان کر دیا۔میڈیا کلب تخت بھائی میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے مرکزی انجمن تاجران تخت بھائی کے صدر و ڈسٹرکٹ کونسلر حاجی محمد طارق،ڈسٹرکٹ کونسلر ڈاکٹر حفیظ الوہاب ، تحصیل کونسلرموسیٰ خان، وی سی ناظمین شیر زمین، محمد عمران، میاں نصراللہ، خانزادہ عرف منے حاجی عمرا خان ٹھیکیدار ، کونسلران اکرام ماموں ، انجینئر شہزاد حسین، اے این پی کے سعادت خان ، پی ٹی آئی کے ڈاکٹر زاہد حسین اور نظام الدین نے کہا کہ اس سے قبل فلائی اوور منصوبے نے شہریوں اور ٹرانسپورٹرز کو اذیت میں مبتلاء کیا تھا جبکہ فلائی اوور کی تکمیل کے بعد دونوں اطراف سروس روڈ پر جابجا کھڈے بن گئے ہیں لیکن این ایچ اے حکام کو علاقے کی عوام اور ٹرانسپورٹرز کی مشکلات کا کوئی احساس نہیں دوسری طرف فلائی اوور کی ناقص تعمیر کے باعث تمام ٹریفک پل پر رواں دواں ہے جس کی وجہ سے کسی بھی وقت بڑا جان لیوا حادثہ رونماء ہو سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ فلائی اوور پر جو سٹریٹ لائٹس لگائی گئیں تھیں ناقص میٹریل کی استعمال کی وجہ سے سب کے سب خراب ہو چکی ہیں جبکہ فلائی اوور پر سائیڈ وال نہ ہونے کی وجہ سے نیچے واقع گھروں کی چادر و چار دیواری کی تقدس بھی پامال ہورہی ہے ، اس کے ساتھ ساتھ سروس روڈ کی خراب حالت کے باعث گاڑیوں کے یہاں سے گزرنا انتہائی دشوار صورتحال اختیار کر چکا ہے جبکہ نکاسی آب کا سسٹم نہ ہونے کی وجہ سے دوران بارش پانی جمع ہو کر پیدل چلنے والے اور ٹرانسپوٹرز کو مزید مشکلات سے دوچار کر دیتی ہیں ، انہوں نے وفاقی و صوبائی حکومت سمیت این ایچ اے حکام کو فلائی اوور سروس روڈکی تعمیر، فلائی اوور پر لائٹس اور گرل لگانے کے لیے 20دسمبر تک ڈیڈ لائن جبکہ مطالبات تسلیم نہ ہونے کی صورت میں شاہراہ ملاکنڈ اور فلائی اوور کو ہر قسم کی ٹریفک کے لیے بند کرنے کا اعلان کر دیا ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر