نوجوان کو تیزاب سے جھلسانے کے مقدمہ میں ملوث ملزمہ کو 2 بار سزائے موت

نوجوان کو تیزاب سے جھلسانے کے مقدمہ میں ملوث ملزمہ کو 2 بار سزائے موت

ملتان ( خبر نگار خصوصی) جج انسداددہشت گردی کی خصوصی عدالت نمبر 1 ملتان نے نے شادی کرنے سے انکارکرنے پرنوجوان کوتیزاب سے جھلسانے کے مقدمہ میں (بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

ملو ث خاتون ملزمہ کو2مرتبہ سزائے موت،25 سال قیداور20 لاکھ روپے معاوضہ وجرمانہ کی سزا کاحکم دیاہے۔دریں اثناء فاضل عدالت نے خاتون کے شوہرریاض حسین کو اب تک غائب رہنے پراشتہاری قراردے کردائمی وارنٹ گرفتاری جاری کرنے اورملزموں اللہ دتہ وآصف کوڑاکوبری کرنے کاحکم دیاہے۔فاضل عدالت میں محمدصدیق نے استغاثہ دائرکیا تھاکہ علاقہ کی رہائشی مومل عرف شمیراعرف شملی اس کے 23 سالہ بیٹے صداقت کو پسند کرتی تھی اوراس کواپنے پاس بلانے کے ساتھ رقم بھی لوٹتی رہی بعدازاں اس کے سمجھانے پر بیٹا ملنے سے بازآگیالیکن مذکورہ خاتون نے 15 جون 2016 ء کو اس کے بیٹے کودوبارہ گھر بلایاجہاں خاتون کے خاوند ریاض حسین ،رشتہ داروں اللہ دتہ اورآصف کوڑانے بیٹے کے کپڑے اتارکرپکڑلیاجبکہ خاتون نے اس پر تیزاب انڈیل دیاجس کے بعداس کو راستے میں پھینک دیااوردوسرے بیٹے رفاقت علی کو فون کرکے کہاصداقت علی کوسجاکرروانہ کردیاہے بعدازاں صداقت علی کو نشترہسپتال میں داخل کرایاجہاں 6 روزداخل کرنے کے بعد21 جون کوبیٹافوت ہوگیالیکن پولیس نے مقدمہ کی تفیتش درست نہیں کی اورادھورے واقعات لکھے ہیں اس لئے استغاثہ دائرکیاہے۔ اس ضمن میں ملزمہ کے مطابق وہ 4 بچوں کی ماں ہے اورمقتول اس کوشادی کاجھانسہ دے کراس کی عزت سے کھیلتارہااوراسی کے کہنے پر عدالت میں شوہرسے طلاق لینے کے لئے درخواست بھی دائرکی لیکن بعدمیں شادی سے انکارکرنے پراس پر غصہ میں آکرتیزاب پھینک دیاتھا۔فاضل عدالت نے جرم ثابت ہونے پرمذکورہ خاتون ملزمہ کو قتل،دہشت گردی اورتیزاب سے جھلسانے کی دفعات کے تحت سزاؤں کاحکم دیاہے۔

ملزممہ سزائے موت

مزید : ملتان صفحہ آخر