معصوم طالبہ کا قتل‘ میلسی میں شٹر ڈاؤن ‘ وکلاء کی ہڑتال‘ تعلیمی ادارے بند

معصوم طالبہ کا قتل‘ میلسی میں شٹر ڈاؤن ‘ وکلاء کی ہڑتال‘ تعلیمی ادارے بند

میلسی(نمائندہ پاکستان ) دوسری جماعت کی کمسن معصوم طالبہ زاہرہ محمود سے زیادتی کے بعد قتل کے واقعہ کیخلاف پور ا شہر سراپا احتجاج بن گیا مرکزی انجمن تاجران کی کال پر میلسی شہر میں(بقیہ نمبر16صفحہ12پر )

مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال کی گئی جبکہ با رایسوسی ایشن میلسی نے بھی واقعہ کیخلاف ہڑتال کی اور وکلاء عدالتوں میں پیش نہ ہوئے شہر بھر کے تمام تعلیمی ادارے بند کر دیئے گئے شہریوں کا اندوہناک واقعہ میں ملوث قاتل کی فوری گرفتاری کا مطالبہ مظاہرین نے شہر کے مختلف مقامات پر ٹائر جلا کر شدید احتجاج کیا اور ٹریفک بلاک کر دی اور شہری واقعہ کی سنگینی کیخلاف سڑکوں پر نکل آئے ذرائع کے مطابق پوسٹمارٹم رپورٹ میں کمسن طالبہ سے زیادتی کی تصدیق ہو گئی ہے جبکہ زیادتی کرنے والے ملزمان کی تعداد ایک سے زائد بتائی گئی ہے قاتلوں نے زیادتی کے بعد گلے میں دوپٹہ ڈال کر معصوم کو قتل کیا اور برہنہ حالت میں زمین میں دفن کر دیا گذشتہ روز مرکزی انجمن تاجران میلسی کے صدر شیخ محمد سلیم، جنرل سیکرٹری کونسلر ملک محمد حبیب اور دیگر تاجر تنظیموں کی اپیل پر میلسی شہر میں واقعہ کیخلاف مکمل ہڑتال کی گئی دکانداروں نے اپنی اپنی دکانیں بند کرتے ہوئے مکمل طور پر شٹر ڈاؤن رکھا میلسی بار ایسوسی ایشن کے صدر سردار نور احمد خان ملیزئی نے بھی میلسی بار میں واقعہ کیخلاف ہڑتال کی کال کی جس پر بار ایسوسی ایشن نے بھی مکمل ہڑتال کی اور کوئی بھی وکیل عدالت میں پیش نہ ہوا شہر بھر کے تمام تعلیمی ادارے بھی بند کر دیئے گئے تا ہم اس دوران چند عناصر ڈنڈے اٹھا کر گورنمنٹ گرلز سکولوں اور کالج پہنچ گئے اور زبر دستی خوف و ہراس پھیلاتے ہوئے لڑکیوں کے تعلیمی ادارے بند کرانے کی کوشش کرتے رہے اس دوران مظاہرین نے ریلوے کراسنگ چوک میں دھرنا دیا اور قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا اس موقع پر ڈی پی او وہاڑی عمر سعید ملک اور ڈی ایس پی میلسی رانا اکمل رسول نادر نے مظاہرین کو یقین دلایا کہ تین روز کے اندر اندر پولیس قاتلوں کو گرفتار کر لے گی جس پر مظاہرین پر امن طور پر منتشر ہو گئے تا ہم شہر کے مختلف مقامات پر احتجاج اور ٹائر جلا کر روڈ بلاک کرنے کے واقعات دن بھر جاری رہے دوسری جانب پولیس نے واقعہ کے تمام پہلوؤ ں کو مد نظر رکھتے ہوئے اپنی تفتیش کا آغاز کر دیا پولیس ذرائع کے مطابق غالب امکان ہے کہ قاتلوں کا تعلق سرکلر روڈ کے قریبی علاقوں سے ہو گا پولیس نے اس سلسلے میں معلومات کا سلسلہ شروع کر دیا ہے ۔دریں اثناء ڈی پی او وہاڑی عمر سعید ملک نے پولیس کے ماہر افسران کے ہمراہ جائے وقوعہ کا معائنہ کیا اور شواہد کا جائزہ لیتے ہو ئے ڈی ایس پی میلسی اور دیگر آفسران سے مو قع پر بریفینگ لی بعد ازں ڈی پی او متاثرہ خاندان کے گھر پہنچے اور مقتولہ بچی کے والد اور دیگر ورثاء سے اظہار تعزیت کر تے ہوئے فاتحہ خوانی کی اس موقع پر انہوں نے کہا کہ میلسی کے شہری صبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑیں اور پولیس سے تعاون کریں تاکہ سفاک قاتل قانون کی گرفت میںآسکے ۔انہوں نے کہا کہ ماہر پولیس آفسران کو اس کیس کا ٹاسک دیا گیا ہے انشاء اللہ قاتل جلد بے نقاب ہو گا ۔اس موقع پر چیئر مین بلدیہ توصیف احمد خان ،صدر انجمن تاجران شیخ محمد سلیم ،ملک محمد حبیب ،مہر عبدالغفار ،شیخ سلمان خالق ،ایس پی انویسٹی گیشن میڈم زبیدہ پروین ،ڈی ایس پی رانا اکمل رسول سمیت شہریوں کی کثیر تعداد موجود تھی ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر