جامعہ زکریا‘ سکیورٹی انتظامات، گاڑیوں کی لمبی قطاریں‘ بوسن روڈ پر ٹریفک جام

جامعہ زکریا‘ سکیورٹی انتظامات، گاڑیوں کی لمبی قطاریں‘ بوسن روڈ پر ٹریفک ...

ملتان (سٹاف رپورٹر) بہا ء الدین زکریا یونیورسٹی میں سکیورٹی کے سخت انتظامات کے باعث گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں، پولیس اور وارڈن غائب ہو گئے ، بوسن روڑ پر ٹریفک جام ہوگئی(بقیہ نمبر17صفحہ12پر )

۔گاڑیاں پھنسی رہیں۔ تفصیل کے مطابق زکریا یونیورسٹی سانحہ زرعی ڈائریکٹوریٹ پشاور کے بعدگزشتہ روزکھل گئی مگرسکیورٹی کے سخت ترین اقدامات کئے گئے تھے۔ ڈاکٹر مقرب اکبر ریذیڈنٹ آفیسر اور خلیل کھور سکیورٹی آفیسر صبح سویرے مین گیٹ پر پہنچ گئے۔ انہوں نے اپنی نگرانی میں تمام کاروں، رکشوں اور موٹر سائیکلوں کو چیک کرانے کے بعد یونیورسٹی میں داخلے کی اجازت دی۔ اس موقع پر ٹریفک کے رش کی وجہ سے بوسن روڈ پر بیکن ہاؤس سکول تک گاڑیاں پھنسی رہیں۔ ٹریفک کنٹرول کرنے کیلئے پولیس ا ہلکار موجود تھے نہ وارڈن تھے جبکہ ضلعی انتظامیہ نے یقین دہانی کرائی تھی کہ صبح او ر چھٹی کے اوقات میں وارڈن ڈیوٹی دیں گے مگر ایسا نہ ہوا ۔ٹریفک وارڈن کی ڈیوٹی بھی یونیورسٹی سکیورٹی گارڈز کرتے رہے۔ چیف سکیورٹی آفیسر خلیل کھور نے مزید گارڈ زگیٹ پر منگوا کر بوسن روڈ چوک پر لگا دئیے جنہوں نے ٹریفک کی روانی کو ممکن بنایا۔ مزید براں یونیورسٹی حکام نے یونیورسٹی گیٹ پر رکشوں کے کوائف چیک کرنے شروع کردئے ہیں ڈرائیورز کے شناختی کارڈز اور کاغذات کولازمی قرار دے دیا گیا ہے ۔حکام کا کہنا ہے کہ رکشوں کے بارے میں پالیسی وائس چانسلر کی واپسی کے بعد طے کی جائے گی۔ علاوہ ازیں یونیورسٹی سکیورٹی حکام کو لیڈی سکیورٹی گارڈز کی ضرورت پڑ گئی۔ سانحہ پشاور کے بعد سکیورٹی حکام الرٹ ہوگئے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ لیڈی سکیورٹی گارڈز کی سخت ضرورت ہے۔

یونیورسٹی سکیورٹی انتظامات

مزید : ملتان صفحہ آخر