سعودی عرب بیت المقدس کو فلسطینی ریاست کا دارلحکومت تسلیم کرتا ہے ،امریکہ کا سفارتخانہ بیت المقدس منتقل کرنےکا فیصلہ باعث تشویش ہے:سعودی کابینہ

سعودی عرب بیت المقدس کو فلسطینی ریاست کا دارلحکومت تسلیم کرتا ہے ،امریکہ کا ...
سعودی عرب بیت المقدس کو فلسطینی ریاست کا دارلحکومت تسلیم کرتا ہے ،امریکہ کا سفارتخانہ بیت المقدس منتقل کرنےکا فیصلہ باعث تشویش ہے:سعودی کابینہ

  

ریاض(ڈیلی پاکستان آن لائن)سعودی کابینہ کا کہنا ہے کہ سعودی عرب فلسطینیوں کی حق خودارادیت کی مکمل حمایت کرتا ہے ہم بیت المقدس کو فلسطینی ریاست کا دارالحکومت تسلیم کرتے ہیں ا مریکہ کا سفارتخانہ بیت المقدس منتقل کرنےکا فیصلہ باعث تشویش ہے۔

زرعی ڈائریکٹوریٹ حملے کے بعد پشاور میں ناکوں پر خواتین پولیس اہلکارتعینات

میڈیا رپورٹس کے مطابق سعودی کابینہ کی طرف سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق امریکابین الاقوامی قراردادوں کے تحت مسئلہ فلسطینی حل کرنے میں مدد کرے امریکی حکومت اپنے اقدام سے پیدا ہونیوالے منفی نتائج پرغور کریں۔کابینہ کے مطابق یمن کے بحران سے نکل کرعرب دنیامیں واپس لوٹنے کے خواہشمندہیں یمنی سرزمین کی وحدت،خودمختاری ، سالمیت یقینی بنانے پرزور دیتے ہیںامیدہے حوثی باغیوں کیخلاف یمنی عوام کی مزاحمت کے مثبت نتائج سامنے آئینگے۔

واضح رہے وائٹ ہاوس کے ترجمان ہوگن گڈلے کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق امریکی صدر گزشتہ 48 گھنٹوں میں اتحادیوں کی جانب سے تنبیہ اور عالمی رہنماوں کی نجی فون کالز کے بعد تل ابیب سے امریکی سفارت خانے کو بیت المقدس منتقل کرنے کے مقررہ وقت کی حتمی تاریخ سے قبل فیصلہ نہیں کریں گے۔فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق امریکی صدر نے اب تک اس معاملے میں اپنا حتمی فیصلہ نہیں دیا ہے تاہم امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ وہ امریکی سفارت خانے کو تل ابیب سے یروشلم منتقل کرنے کے فیصلے کو موخر کر دیں گے۔امریکی اندرونی سیاست نے امریکی صدر کو بیت المقدس کو اسرائیل کے دارالحکومت کے طور پر تسلیم کرنے کے لیے زور دیا جس میں کنزرویٹو ووٹرز اور ڈونرز شامل ہیں۔

ڈیلی پاکستان کے یو ٹیوب چینل کو سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں پر کلک کریں

مزید : عرب دنیا