نومولود مردہ بچہ جنازے کے راستے میں اُٹھ کر بیٹھ گیا اور پھر۔۔۔

نومولود مردہ بچہ جنازے کے راستے میں اُٹھ کر بیٹھ گیا اور پھر۔۔۔
نومولود مردہ بچہ جنازے کے راستے میں اُٹھ کر بیٹھ گیا اور پھر۔۔۔

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کے ایک ہسپتال میں خاتون نے قبل از وقت جڑواں بچوں کو جنم دیا جن میں سے ایک کو ڈاکٹروں نے مردہ قرار دے دیا۔ جب والدین اسے آخری رسومات کے لیے لیجارہے تھے تو ایسا کام ہو گیا کہ ڈاکٹروں کی شامت آ گئی۔ ویب سائٹ azcentral.com کی رپورٹ کے مطابق میکس ہیلتھ کیئر ہسپتال میں ڈاکٹروں نے پہلے پیدا ہونے والے بچے کو مردہ قرار دیا اورپلاسٹک بیگ میں ڈال کر والدین کو تھما دیا۔ والدین اسے آخری رسومات کے لیے لیجا رہے تھے کہ راستے میں بیگ میں حرکت محسوس ہوئی جس پر انہوں نے دیکھا تو بچہ زندہ تھا۔

سنی لیون نے ایک بار پھر بالی ووڈ کی ہیرئنوں کو پیچھے چھوڑ دیا ،ایسے میدان میں سب سے آگے نکل گئیں کہ ”ہوس کے پجاری “بھارتیوں کا پول دنیا کے سامنے کھل گیا

والدین اسے فوری طور پر واپس ہسپتال لائے اور ڈاکٹروں نے اسے لائف سپورٹ پر لگا دیا۔ والدین ڈاکٹروں کی اس حرکت پر مشتعل ہو گئے اور ہسپتال میں احتجاج کیا۔ واقعہ منظرعام پر آیا تو بھارت کے وزیرصحت نے ہسپتال انتظامیہ کو لائسنس معطل کرنے کی دھمکی دے دی۔ ہسپتال کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ واقعے کے ذمہ دار 2ڈاکٹروں کو نوکری سے فارغ کر دیا گیا ہے اور مزید تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ والدین کے ساتھ بھی ہرممکن تعاون کیا جا رہا ہے۔ بچوں کے والد اشیش کا کہنا تھا کہ ”میری بیوی کے جسم سے اچانک خون بہنا شروع ہو گیا جس پر میں اسے ہسپتال لایا۔ ڈاکٹروں نے اس کا فوری آپریشن کرنے کو کہا۔ ابھی وہ پانچ ماہ کی حاملہ تھی۔ انہوں نے ماں اور بچے کو زندہ رکھنے کے لیے مجھ سے اضافی رقم بھی لی لیکن بالآخر ہمیں اس تکلیف سے دوچار کر دیا جس کا ہم نے کبھی سوچا بھی نہ تھا۔“

مزید : بین الاقوامی