صحت کی سہولیات میں بھارت پاکستان سے آگے، سری لنکا بھوٹان اور بنگلہ دیش سے پیچھے

  صحت کی سہولیات میں بھارت پاکستان سے آگے، سری لنکا بھوٹان اور بنگلہ دیش سے ...

  

لندن (آئی این پی)لندن اور امریکہ سے شائع ہونیوالے میگزین لانسیٹ نے دنیا میں صحت کی سہولیات کی فراہمی کے حوالے سے ایک رپورٹ مرتب کی ہے جس میں بتایا گیا ہے تپ دق، امراض قلب، فالج،کینسر،گردے اوردیگر بیماریوں سے نمٹنے کے معاملے میں بھارت کی کارکردگی خراب رہی ہے۔ اس رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے سری لنکا، بھوٹان اور بنگلہ دیش جیسے پڑوسی ممالک ہیلتھ کیئر کے معیار اور اس تک رسائی کے معاملے میں بھارت سے کہیں آگے ہیں۔ 195ملکوں کی فہرست میں سری لنکا 71ویں، بنگلہ دیش 133 ویں اور بھوٹان 134ویں مقام پر جبکہ چین، بھارت سے بہت آگے 48ویں مقام پر ہے۔ بھارت بہر حال نیپال، پاکستان اور افغانستان سے بہتر پوز یشن میں ہے۔ یہ مما لک بالترتیب 149ویں، 154ویں اور 191نمبر پر ہیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یہ نتائج ہیلتھ کیئرکو معیاری بنا نے اور ان تک سماج کے تمام طبقات تک رسائی کو بہتر بنانے کی فو ر ی ضرورت کو اجاگر کرتے ہیں بصورت دیگر صحت کی دیکھ بھال کے نظام کوصحت خدمات فراہم کرنیوالوں اور بیماریوں سے پریشان عوام کے درمیان بڑھتے ہوئے خلیج کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔بین الاقوامی خبر ر سا ں ادارے کے مطابق لندن اور امریکہ سے شائع ہونیوالے جرنل لانسیٹ نے اپنی رپورٹ کی تیاری میں ہیلتھ کیئر کے میعار اور اس تک رسائی کا ماپنے کیلئے اموات کے ایسے 32اسباب، جنہیں موثر طبی دیکھ بھال کے ذریعہ روکا جاسکتا ہے کو بنیاد بنایا ہے۔ 195ملکوں میں سے ہر ایک ملک کا صفر سے 100کے سکور کی بنیاد پر تجزیہ کیا گیا۔انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ہیومن ڈیولپمنٹ، دہلی میں فیلو پرتیما یادو کا بھار ت میں معیاری ہیلتھ کیئر کی کمی کے حوالے سے کہنا تھا حالانکہ حکومت نے آیوش مان بھارت کے نام سے گذشتہ برس ستمبر میں ہیلتھ انشورنس کی ایک نہایت وسیع سکیم شروع کی ہے۔ اس سکیم کو بلا شبہ دنیا میں اب تک کسی بھی ملک میں شروع کیا گیا سب سے بڑا سوشل ہیلتھ انشو رنس پروگرام کہا جاسکتا ہے لیکن اس میں بہت ساری بنیادی چیزوں کی وضاحت نہیں ہے۔ مثلا یہ نہیں بتایا گیا پرائمری ہیلتھ مراکز کو کس طرح مالی مدد دی جائیگی اور انہیں کیسے مستحکم بنایا جائے گا۔

صحت سہولیات

مزید :

صفحہ آخر -