امریکہ، طالبان افغان امن مذاکرات بحال کرنے پر تیار 

امریکہ، طالبان افغان امن مذاکرات بحال کرنے پر تیار 

  

واشنگٹن(اظہر زمان،بیوروچیف) امریکی وزارت خارجہ کے ذرائع کے مطابق امریکہ اور طالبان امن مذاکرات بحال کرنے پر تیار ہو گئے۔ معلوم ہوا ہے حال ہی میں صدر ٹرمپ نے کابل کے خفیہ دورے کے دوران اس سلسلے میں جو گرین سگنل دیا تھا اس کے بعد خصوصی مندو ب زلمے خلیل زاد نے نئے رابطوں کا آغاز کیا جس کا مثبت جواب ملا۔ وہ مذاکرات کی تیاری کیلئے افغانستان اور قطر کے دورے کیلئے پہلے ہی کابل پہنچ گئے ہیں جہاں وہ افغان امن عمل کے حوالے سے کابل انتظامیہ کو اعتماد میں لینے کیلئے بات چیت میں مصروف ہیں۔ ذرائع کے مطابق قطر حکومت نے طالبان لیڈروں سے رضا مندی حاصل کرکے انہیں باقاعدہ مذاکرات شروع کرنے کا اشارہ دیدیا۔ اس دوران امریکی وزیر دفاع مارک ایسپر نے واضح کیا قطر میں جو امن مذاکرات بحال ہو رہے ہیں وہ امریکی افواج کی واپسی سے مشروط نہیں۔ پینٹا گون کی اطلاع کے مطابق انہوں نے لندن کے دورے کے دوران ایک انٹرویو میں یہ تبصرہ کیا۔ مسٹر الیسپر نے بتایا افغانستان میں امریکی فوج کی تعداد کو کم کرنے کا فیصلہ صدر ٹرمپ کی نئی حکمت عملی کا ایک حصہ ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی امن عمل کے نتیجے میں طالبان جلد ہی اٹھارہ سالہ جنگ میں سیز فائر کرنے کا اعلان کر دیں گے۔

امریکہ طالبان

مزید :

صفحہ اول -