عمران فاروق قتل کیس،برطانوی گواہوں کی ویڈیو لنک بیان کیلئے درخواست منظور

عمران فاروق قتل کیس،برطانوی گواہوں کی ویڈیو لنک بیان کیلئے درخواست منظور
عمران فاروق قتل کیس،برطانوی گواہوں کی ویڈیو لنک بیان کیلئے درخواست منظور

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)انسداددہشتگردی عدالت نے ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس میں 32 برطانوی گواہوں کی ویڈیو لنک بیان کیلئے درخواست منظور کرلی ۔

تفصیلات کے مطابق انسداددہشتگردی عدالت میںڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس کی سماعت ہوئی، ایف آئی اے پراسیکیوٹرنے ویڈیو لنک بیانات کیلئے درخواست دی جس پر وکلا صفائی نے ویڈیولنک کے ذریعے بیان پراعتراض کردیا،برطانوی گواہوں کی فہرست عدالت میں پیش کردی گئی ،مقتول عمران فاروق کی اہلیہ بھی گواہوں میں شامل ہیں۔

پراسیکیوٹر خواجہ امتیاز نے کہاکہ گواہوں کے بیانات کیلئے لندن میں انتظامات کرنے ہیں، روزانہ کی بنیاد پر بیان ریکارڈ کروائیں گے، عدالت نے کہا کہ لگتا ہے آپ معاملہ موسم سرماکی چھٹیوں کے بعد تک لے جاناچاہتے ہیں، جج نے کہا کہ لندن پولیس کے تفتیشی افسر بیان قلمبند کرواچکے،ان پولیس افسران کوکیوں شامل کیاجنہوں نے صرف گواہوں کے بیانات ریکارڈ کیے؟وہ گواہ تو خود اس عدالت میں بیان ریکارڈ کرا دیں گے۔

پراسیکیوٹر نے کہاکہ موقع آنے پر غیر ضروری گواہوں کو ترک کر دیا جائے گا،بعض گواہوں کے صرف 4 سے 6 لائنوں کے بیان ہو ں گے،وکیل نے کہاکہ معلوم نہیں گواہ برطانیہ میں کن حالات میں بیٹھا ہوگا؟ پراسیکیوٹر نے کہاکہ بینظیرقتل کیس میں بھی ویڈیو لنک بیان ریکارڈ کیاگیا۔

جج نے کہاکہ درخواست منظوری پرہائی کمیشن میں بیان ریکارڈکرانےکاکہاجائےگا،ایف آئی اے نے مزید 32 برطانوی گواہوں کی لسٹ پیش کردی،برطانوی فنگرپرنٹ ایکسپرٹ، فرانزک ماہرین بھی گواہوں میں شامل ہیں،اس کے علاوہ لندن اکیڈمی آف مینجمنٹ سائنسز کے ڈائریکٹر بھی گواہوں میں شامل ہیں،ایف آئی اے نے کہاکہ ویڈیولنک کے انتظامات کیلئے ایک ماہ کا وقت دیا جائے۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...