شہد کا کاروبار ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے:صدرسرحد چیمبر آف کامرس

شہد کا کاروبار ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے:صدرسرحد چیمبر آف ...
شہد کا کاروبار ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے:صدرسرحد چیمبر آف کامرس

  



پشاور(این این آئی) سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر انجینئر مقصود انور پرویز نے کہا ہے کہ شہد کا کاروبار ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے۔ حکومت شہد کی ایکسپورٹ کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کے لئے عملی اقدامات اٹھائے۔شہد کے کاروبار سے وابستہ افراد کی باقاعدہ ٹریننگ‘ رجسٹریشن‘ لائسنس کے حصول‘ بوتل کی پیکنگ کوالٹی کنٹرول سے متعلق بی کیپرز میں شعور اجاگر کرنے کیلئے ورکشاپ کے انعقاد کئے جائیں۔ حکومت شہد کی ایکسپورٹ کے فروغ کے لئے بین الاقوامی منڈیوں تک رسائی کیلئے شہد کے ایکسپورٹرز کی رہنمائی اور معاونت کرے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز آل پاکستان بی کیپرز ا یکسپورٹرز اینڈ ہنی ٹریڈرز ایسوسی ایشن کے صدر سلیم خان کی قیادت میں وفد سے ملاقات کے دوران کیا۔ اس موقع پر سرحد چیمبر کے نائب صدر عبدالجلیل جان اور صدر گل‘ ایسوسی ایشن کے جائنٹ سیکرٹری شیر زمان‘ سینئر نائب صدر گل بادشاہ‘ ہنی ایکسپورٹرز حاجی اسراراللہ‘ حاجی نسیم‘ ہنی ٹریڈرز کے نائب صدر عبدالرحمان اور سیکرٹری سید انور شاہ موجود تھے۔ سرحد چیمبر کے صدر انجینئر مقصود انور پرویز نے وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ تاجروں‘ ایکسپورٹرز اور صنعتکاروں کو درپیش مسائل کے حل کیلئے بزنس فیسیلی ٹیشن سنٹر کے قیام کے لئے اقدامات کئے جا رہے ہیں جوکہ ٹیکسوں سمیت دیگر مسائل کے حل کیلئے کافی معاون ثابت ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ تاجر برادری کے پراپرٹی ٹیکس کے حوالے سے تحفظات کو حکومتی حکام کے سامنے پیش کئے گئے ہیں جس پر حکومت کی جانب سے مثبت پیش رفت سامنے آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پراپرٹی ٹیکس سمیت بزنس کمیونٹی کے دیگر مسائل کے فوری حل کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔ انہوں نے کہاکہ شہد کا کاروبار ملکی معیشت کی ترقی میں ریڑکی ہڈ ی کی حیثیت رکھتا ہے اس لئے شہد کے کاروبار سے وابستہ افراد اور ایکسپورٹرز کے مسائل کے حل کیلئے فوری اقدامات اٹھانے کی اشد ضرورت ہے۔ اس موقع پر آل پاکستان ہنی بی کیپرز ایسوسی ایشن کے صدر سلیم خان نے سرحد چیمبر کے صدر انجینئر مقصود انور پرویز کو شہد کے کاروبار سے وابستہ افراد کو درپیش مسائل کے حل کیلئے سے تفصیلاً آگاہ کیا۔ ایسوسی ایشن کے صدر نے کہاکہ شہد کے ٹریڈرز اور ایکسپورٹرز صوبائی محکمہ جات کی جانب سے پراپرٹی ٹیکس اور دیگر ٹیکسوں کی آڑ میں ہراساں کرتے ہیں جوکہ قابل مذمت ہے۔ انہوں نے سرحد چیمبر کے صدر سے درخواست کی کہ ان مسائل کے فوری حل کیلئے صوبائی حکومت سے موثر انداز میں بات چیت کی جائے۔ سرحد چیمبر کے صدر نے یقین دلایا کہ صوبہ کا پرائم چیمبر ہونے کے ناطے تاجر وں‘ صنعتکاروں اور ایکسپورٹرز کے دیرینہ مسائل کے حل کیلئے حکومتی سطح پر آواز اٹھاتے رہیں گے۔ ایسوسی ایشن کے صدر نے بی کیپرز کیلئے ٹریننگ سنٹر کے قیام‘ ایکسپورٹرز میں اضافہ‘ ون ٹائم گرانٹ‘ جنگلات کی بے تحاشہ کٹائی کی روک تھام‘ پراپرٹی ٹیکس اور ڈبل ٹیکسیشن کے خاتمہ اور دیگر مسائل کے فوری حل کرنے کی یقین دہانی پر سرحد چیمبر کے صدر کا شکریہ ادا کیا۔

مزید : بزنس


loading...