کرسی چھوڑنا منظور لیکن کرپشن معاف نہیں کروں گا:وزیراعظم عمران خان

کرسی چھوڑنا منظور لیکن کرپشن معاف نہیں کروں گا:وزیراعظم عمران خان
کرسی چھوڑنا منظور لیکن کرپشن معاف نہیں کروں گا:وزیراعظم عمران خان

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کرسی چھوڑنی پڑی چھوڑ دوں گا لیکن کرپشن معاف نہیں کروں گا۔ ان کا کہنا تھا کہ ڈرگز اور نشے وغیرہ سے عارضی خوشی یا اطمینان ہوتا ہے، دائمی خوشی آپ کو روحانیت سے میسر آسکتی ہے۔

نجی ٹی وی ہم نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کے جلسوں سے پریشر میں نہیں آؤں گا، پی ڈی ایم کے جلسوں میں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالیں گے، آرگنائزر اور کرسیاں دینے والوں کے خلاف قانونی کارروائی ہو گی۔

اپنی ذاتی زندگی سے متعلق انہوں نے کہا کہ میری زندگی کا تجربہ باقیوں سے مختلف ہے، میں 18 سال کی عمر میں برطانیہ چلا گیا، مجھے نوجوانی میں دو مختلف ثقافتوں میں زندگی گزارنے کا تجربہ ہوا، تجربے سے ہی میرے اندر تبدیلی آئی۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہمارے لیے رول ماڈل نبی اکرم ﷺہیں کیونکہ ان جیسا عظیم آدمی اس دنیا میں کوئی نہیں آیا۔ ہم نے نویں اور دسویں جماعت کے سلیبس حضرت محمد ﷺ کی سیرت ،ان کی حالات زندگی کے بارے رکھا گیا ہے جس سے ہمارے بچوں میں شعور پیدا ہوگا۔

عمران خان کاکہنا تھا کہ ہمیں علامہ اقبالؒ کی تعلیمات کی طرف جانا ہوگا، ہمارے پاس دوراستے ہیں اچھائی یا برائی کا راستہ، پچھلے چالیس کے اندرمغرب کا فیملی سسٹم ٹوٹا، مغرب میں پاپ سٹارزنے منشیات کوفیشن بنادیا تھا۔ معاشرے کی برائی کو اچھائی بنا کر پیش کیا جائے تو وہ پھیل جاتی ہے۔ ہالی ووڈ میں آنے والی تبدیلی 10سال بعد بالی وڈ پہنچ جاتی ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ڈرگز اور نشے وغیرہ سے عارضی خوشی یا اطمینان ہوتا ہے، دائمی خوشی آپ کو روحانیت سے میسر آسکتی ہے۔ اندر کی خوشی اور اطمینان اللہ کی طرف سے آتا ہے اسے آپ بیان نہیں کرسکتے۔القادر یونیورسٹی میں تصوف اور روحانیت کی تعلیم دی جائے گی جس میں اولیاء کرام کے حالات زندگی کے بارے میں پڑھایا جائے گا۔ 

مزید :

اہم خبریں -قومی -