آسٹریا کے وزیر اعظم سبسٹین کرز کے استعفے کے بعد وزیر داخلہ کارل نہیمر کا وزیر اعظم بننے کا امکان 

آسٹریا کے وزیر اعظم سبسٹین کرز کے استعفے کے بعد وزیر داخلہ کارل نہیمر کا وزیر ...
آسٹریا کے وزیر اعظم سبسٹین کرز کے استعفے کے بعد وزیر داخلہ کارل نہیمر کا وزیر اعظم بننے کا امکان 

  

ویانا (اکرم باجوہ) سابق وزیراعظم سیبسٹین کرز کی پارٹی چیئرمین کی حیثیت سے ریٹائرمنٹ کے بعد حکومتی سطح پر بڑی تبدیلیاں نئے وزیراعظم کے لیے کارل نہیمر مضبوط امیدوار۔

 آسٹریا کے سابق وزیراعظم سبسٹین کرز کی اپنی پارٹی کے چیرمین شپ سے جمعرات کو دستبرداری کے بعد تقریباً 2 ماہ  وزیراعظم رہنے والے الیگزینڈر شلنبرگ کے استعفیٰ کے بعد او وی پی پارٹی کاحکومتی ٹیم میں کوئی بڑا عہدہ باقی نہیں بچا جس نے استعفیٰ نہیں دیا۔

پارٹی میں مشاورت کے بعد وزیر داخلہ کارل نہیمر نئے وزیراعظم اور پارٹی چیئرمین ہوں گے۔ اس سے پہلے او وی پی جمعہ کی صبح سے ویانا میں پارٹی کی پولیٹیکل اکیڈمی میں گھنٹوں مشاورتیں جاری تھیں۔

 فیروزی حکومت کی ٹیم میں بڑے پیمانے پر ردوبدل کے بارے میں پہلی معلومات جمعہ کی صبح منظر عام پر آئی  او وی پی حلقوں کے مطابق  وزیر داخلہ کے طور پر  نہیمر کے جانشین لوئر آسٹریا کے دوسرے صدر گرہیرڈ کارنر   ہوں گے۔ جمعرات کو گیرنٹ بلومل کے وزیر خزانہ اور ویانا او وی پی باس کے طور پر اپنی ریٹائرمنٹ کا اعلان کرنے کے بعد انکی جانشینوں کی تلاش کے لیے مشاورت کی گئی۔

میگنس برنر جو اس وقت ریاستی سیکرٹری برائے انفراسٹرکچر ہیں ، نئے وزیر خزانہ بننے والے ہیں۔ او وی پی ویانا میں بلومل  نے کارل مہرر  کی جگہ پارٹی لیڈر کے طور پر لی،  قلیل مدتی وزیراعظم شلن برگ کے دوبارہ وزیر خارجہ بنائے جانے کا امکان ہے اور وہ خواہشمند بھی ہیں۔

محکمہ کے موجودہ سربراہ مائیکل لن ہارٹ کی بطور سفیر ویانا واپسی کا امکان ہے،  وزارت تعلیم میں بھی تبدیلی کی گئی ہے جہاں ہینز فیبمینن  نے مستعفی ہونے کی پیشکش کی ہے اور گریز یونیورسٹی کے ریکٹر مارٹن پولاسچیک اپنا عہدہ سنبھالنے والے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -