یوکرین  تنازعہ, امریکی اور روسی وزرائے خارجہ کی سویڈن میں اہم ملاقات، بڑی خبر آگئی

یوکرین  تنازعہ, امریکی اور روسی وزرائے خارجہ کی سویڈن میں اہم ملاقات، بڑی ...
 یوکرین  تنازعہ, امریکی اور روسی وزرائے خارجہ کی سویڈن میں اہم ملاقات، بڑی خبر آگئی
سورس: Twitter/@SecBlinken

  

سویڈن( حافظ محمد عمران، سپیشل رپورٹ) سویڈن میں 'آرگنائزیشن فار سکیورٹی اینڈ کوآپریشن ان یورپ' کے اجلاس میں امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن اور روس کے وزیر خارجہ سرگئی لاوروف کی اہم ماقات ہوئی ، ملاقات  میں یوکرین کا تنازعہ ایجنڈے میں سرفہرست رہا ۔

تفصیلات کے مطابق دارالحکومت سٹاک ہوم میں سویڈن کی وزیر خارجہ انا لنڈے کی سربراہی میں 'آرگنائزیشن فار سکیورتی اینڈ کوآپریشن ان یورپ کے اہم اجلاس میں تیظیم کے57 رکن ممالک کے ارکان نے شرکت کی، اجلاس کے دوران امریکی وزیر خارجہ نے اپنے ہم منصب روسی وزیر خارجہ سے تیس منٹ ملاقات کی، او ایس سی ای  کے پلاٹ فارم پرہونے والی دنیا کی دو بڑی طاقتوں کے درمیان یہ کئی سالوں بعد وزرائے خارجہ کی سظح پراہم ملاقات ہے جس میں یوکرین کا تنازعہ ایجنڈے پرسرفہرست رہا۔

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے کہا کہ اگر روس نے یوکرین پر چڑھائی کی تو اس کو سنگین نتائج کا سامنا کرنے کے ساتھ ساتھ اس پر مزید پابندیاں عائد کر دی جائیں گی، امریکہ یوکرین کی حمایت جاری رکھے گا، یوکرین کسی طرح سے بھی روس کے لیے خطرہ نہیں ہے۔

روسی وزیر خارجہ نے نیٹو پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ نیٹو اتحاد کا ملٹری انفراسٹرکچر روسی سرحد کے قریب ہوتا جا رہا ہے،  یوکرین کے تنازعہ پر فوجی تصادم  ڈراؤنا خواب ثابت ہو گا، روسی صدر پوٹن فوجی تصادم نہیں چاہتے، روس نے نئے یورپی سکیورتی معاہدے کی تجویز دی ہے جس پر نیٹو تناؤ کو کم کرنے اور تعمیری جائزہ لینے سے انکاری ہے، دونوں بڑی طاقتوں کے وزرائے خارجہ نے ملاقات میں اتفاق کیا  کہ دونوں ممالک کو تنازعہ کے حل کے لئے اپنی بات چیت جاری رکھنی چاہیے.

مزید :

بین الاقوامی -