داستان انگریزی زبان کے کمال شاعر پروفیسر داؤد کمال کی

داستان انگریزی زبان کے کمال شاعر پروفیسر داؤد کمال کی
داستان انگریزی زبان کے کمال شاعر پروفیسر داؤد کمال کی

  

تحریر : آغا نیاز احمد مگسی 

  آج ہم آپ کو  انگریزی زبان کے مشہور شاعر پروفیسر  داؤد کمال کی داستان سنائیں گے ۔پروفیسر داؤد کمال پاکستان سے تعلق رکھنے والے انگریزی زبان کے مقبول شاعر اور ماہر تعلیم تھے۔ داؤد کمال 4 جنوری 1935ء میں ایبٹ آباد، شمال مغربی سرحدی صوبہ، برطانوی ہندستان میں پیدا ہوئے ۔ انھوں نے برن ہال کیمبرج سکول سری نگر، اسلامیہ کالج پشاور، پشاور یونیورسٹی اور جامعہ کیمبرج سے تعلیمی مراحل مکمل کیے۔جامعۂ پشاور میں ملازمت کی،تمغہ حسن کارکردگی حاصل کیا۔ان کا منفرد اعزاز یہ ہے کہ  1976ء، 1977ء اور 1980ء میں انگریزی شاعری کے عالمی مقابلے میں حصہ لیا اور ہر مرتبہ سونے کا تمغہ جیتا۔ ان تصانیف میں Ghalib: Reverberations, Compass of Love and Other Poems, Faiz in English, Remote Beginning اور Unicorn and the Dancing Girl The کے نام شامل ہیں۔ ان کی  دیگر تصانیف درج ذیل ہیں 

   (1)Compass of Love

       and Other Poems

   (2)Ghalib:Reverberations

   (3)The Unicorn and

       the Dancing Girl

   (4)Faiz in English

  (5)Remote Beginning

 داؤد کمال  نے انگریزی زبان میں اپنے نام کی طرح کمال شاعری کی اور خوب داد پائی ۔ وہ امریکہ میں تھے کہ داعیٔ اجل کو لبیک کہنا پڑا انہوں  نے 5 دسمبر 1987ء کو نیویارک میں آخری سانسیں لیں اور اس دنیا کو خیر آباد کہا۔ ان کی میت کو پاکستان لایا گیا اور وہ پشاور یونیورسٹی کے نوگزا قبرستان میں آسودۂ خاک ہیں۔

مزید :

ادب وثقافت -