چین میں 64 ہزار بچے فضائی آلودگی کی وجہ سے مردہ پیدا ہوتے ہیں، تحقیق میں انکشاف

چین میں 64 ہزار بچے فضائی آلودگی کی وجہ سے مردہ پیدا ہوتے ہیں، تحقیق میں ...
چین میں 64 ہزار بچے فضائی آلودگی کی وجہ سے مردہ پیدا ہوتے ہیں، تحقیق میں انکشاف
سورس: Wikimedia Commons

  

بیجنگ (ڈیلی پاکستان آن لائن) ایک حالیہ تحقیق کے مطابق  چین میں فضائی آلودگی کی وجہ سے ہر سال 64 ہزار مردہ بچوں کی پیدائش ہوتی ہے۔ ساؤتھ چائنا مارننگ پوسٹ  کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ دارالحکومت بیجنگ کی جانب سے آلودگی پر قابو پانے کے لیے گزشتہ 10 سالوں اور اس سے زیادہ عرصے کے دوران کوششیں کرنے کے باوجود یہ بات سامنے آئی ہے۔

137 ممالک میں ہونے والی تحقیق کے مطابق 2015 میں ایشیا، افریقہ اور لاطینی امریکہ میں 40 فیصد مردہ بچوں کی پیدائش کی وجہ  ایندھن کے جلنے  سے پیدا ہونے والی آلودگی کو قرار دیا گیا۔  نیچر کمیونیکیشنز میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق پی ایم 2.5 کی وجہ سے جنین کی اموات کی تعداد کے لحاظ سے مطالعہ شدہ ممالک میں چین چوتھے نمبر پر ہے، جو دنیا بھر میں مردہ بچوں کی پیدائش کا 98 فیصد ہے۔

پیکنگ یونیورسٹی کے محققین نے کہا، '137 ممالک میں سے کچھ میں بہتر ہوا کا معیار (مثلاً، چین) مردہ بچوں کی پیدائش کے عالمی بوجھ میں کمی کا باعث بن سکتا ہے۔ اس لیے عالمی ادارہ صحت کے ہوا کے معیار کے اہداف کو پورا کرنے سے مردہ بچوں کی پیدائش کو روکا جا سکتا ہے۔' انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ چینی حکومت کی فضائی آلودگی سے نمٹنے کی حالیہ کوششوں نے اس طرح کی مزید اموات کو روکا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -ماحولیات -