مبینہ غیر شرعی نکاح کیس ؛ درخواست کے قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے پر دلائل طلب 

مبینہ غیر شرعی نکاح کیس ؛ درخواست کے قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے پر دلائل طلب 
مبینہ غیر شرعی نکاح کیس ؛ درخواست کے قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے پر دلائل طلب 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی  پاکستان آن لائن)ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹس اسلام آباد نے مبینہ غیر شرعی نکاح کیس میں درخواست کے قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے پر دلائل طلب کرلئے۔

نجی ٹی وی چینل جیو نیوز کے مطابق ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹس اسلام آباد سابق چیئرمین پی ٹی آئی اور بشریٰ بی بی کے مبینہ غیرشرعی نکاح کی سماعت ہوئی،سول جج قدرت اللہ کی عدالت میں کیس کی سماعت ہوئی،درخواست گزار وکیل رضوان عباسی اور گواہ محمد لطیف بھی عدالت میں پیش ہوئے،گواہ محمد لطیف خاور مانیکا کے گھریلو ملازم رہےہیں۔

گواہ محمد لطیف نے بیان قلمبند کراتے ہوئے کہاکہ سابق چیئرمین پی ٹی آئی بشریٰ بی بی کے گھر آتے تھے،سابق چیئرمین پی ٹی آئی بشریٰ بی بی کیساتھ کمرے  میں چلے جاتے تھے،میں بشریٰ بی بی کے کمرے میں جاتا تھا تو سابق چیئرمین پی ٹی آئی مجھے گالیاں دیتے تھے،مجھے بشریٰ بی بی ، سابق چیئرمین پی ٹی آئی کہتے تھے کمرے سے باہر چلے جاؤ۔

محمد لطیف نے اپنا بیان درخواست گزار وکیل رضوان عباسی کی موجودگی میں قلمبند کرایا۔

سول جج قدرت اللہ نے گواہ سے استفسار کیا کہ کیا آپ اتنا رو رو کر کمزور ہو گئے ہیں،کیا سابق چیئرمین پی ٹی آئی، بشریٰ بی بی آپ کو کمرے میں ساتھ بٹھاتے تھے؟گواہ محمد لطیف نے کہاکہ مجھے سابق چیئرمین پی ٹی آئی، بشریٰ بی بی کمرے میں ساتھ نہیں بٹھاتے تھے،مجھے خاور مانیکا کہتے تھے جا کر انہیں دیکھو۔

عدالت نے کیس کے قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے پر دلائل طلب کرلئے، عدالت نے غیر شرعی نکاح کیس کی سماعت 8دسمبر تک ملتوی کردی۔