پرویز الہٰی کو بحفاظت گھرنہ پہنچانے کے خلاف دائر درخواست پرفیصلہ جاری

پرویز الہٰی کو بحفاظت گھرنہ پہنچانے کے خلاف دائر درخواست پرفیصلہ جاری
پرویز الہٰی کو بحفاظت گھرنہ پہنچانے کے خلاف دائر درخواست پرفیصلہ جاری
کیپشن: فائل فوٹو

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الہی کو بحفاظت گھر نہ پہنچانے کے خلاف دائر درخواست پرفیصلہ جاری کردیا گیا۔جسٹس سلطان تنویر احمد نے 7صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ جاری کیا ۔

لاہور ہائیکورٹ کے تحریری فیصلے میں لکھا گیا کہ ڈی آئی جی آپریشنز اور ڈی آئی جی انویسٹی گیشن نے تحریری طور پر غیر مشروط معافی مانگی،مستقبل میں  دونوں افسران نے احتیاط کرنے کی یقین دہانی کروائی ،عدالت کو مزید کرمنل کارروائی کی ضرورت نظر نہیں آتی ،توہین عدالت میں سزا دینے کا اختیار ایک غیر معمولی طاقت ہے ،جہاں ضروری ہو اس کا استعمال انتہائی احتیاط کے ساتھ کیا جاسکتا ہے ،توہین کامقصد انتقام لینا نہیں ہے ، اسلام میں معافی کرنے کا ذکر بھی ہے ۔

عدالتی فیصلے میں مزید کہا گیا کہ پولیس افسر کے مطابق عدالتی حکم کے بعد گھر کے قریب اسلام آباد پولیس نے پرویز الہی کو گرفتار کیا ،پولیس افسران کے مطابق اسلام آباد پولیس کے پاس جوڈیشل مجسٹریٹ گرفتاری کا حکم موجود تھا ،گرفتاری کے بعد دونوں افسران نے رجسٹرار ہائیکورٹ کو گرفتاری سے متعلق آگاہ کیا ۔

خیال رہے کہ پرویز الہی کی اہلیہ قیصرہ الہٰی نے توہین عدالت کی درخواست دائر کررکھی تھی۔

مزید :

سیاست -