پاکستان سٹیل ملز کی پیداواررواں ماہ 60 فیصد تک پہنچ جائیگی

پاکستان سٹیل ملز کی پیداواررواں ماہ 60 فیصد تک پہنچ جائیگی

           کراچی(آن لائن)پاکستان اسٹیل نے دسمبر اور جنوری میں 30 فیصد پیداوار حاصل کرنے کا دعویٰ کرتے ہوئے رواں ماہ پیداوار 60 فیصد تک پہنچانے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔ترجمان پاکستان اسٹیل نے بتایا کہ اپریل2014 میں پاکستان اسٹیل کی مجموعی پیداوار1.4 فیصد تھی جو 18 ارب 50 کروڑ روپے کے حکومتی مالیاتی پیکیج کی وجہ دسمبر2014 اور جنوری2015 میں 30 فیصد تک پہنچ گئی، فروری2015 میں60 فیصد پیداوار حاصل کریں گے۔ ترجمان نے بتایا کہ 23 ارب روپے پاکستان اسٹیل کی پیداوار کو جاری مالیاتی پیکیج سے اپریل2015 میں77 فیصد پیداوار لے جانے کے بعد اس کو مستحکم اور دیرپا بنانے کے لیے مانگے گئے ہیں، اس سے پیداوار 100 فیصد تک یعنی 1.1 ملین ٹن تک لے جانے میں بھی مدد ملے گی کیونکہ اس میگا پلانٹ کوگزشتہ 6 سال سے کیپٹل ری پیئرسے محروم رکھا گیا۔ترجمان نے کہاکہ انتظامیہ پلانٹ کی اس حالت میں بھی اپنے کیے گئے وعدے کوپورا کرکے 77 فیصد تک پیداوار حاصل کرے گی لیکن اس کو پائیدار بنیادوںپر چلانے اور ایسیٹ بلڈنگ کے لیے یہ فنڈز مانگے جارہے ہیں جبکہ ان 23ارب روپے کی ری پیمنٹ چند سال میں ممکن ہوجائے گی۔ ترجمان نے کہا کہ یہ بتانا بھی ضروری ہے کہ 18 ارب 50 کروڑ روپے کے مالیاتی پیکیج سے اس سال خسارہ 9 ارب روپے اور آئندہ سال20 ارب روپے مزید کم ہوگا، اس لیے 18ارب50 کروڑ روپے اور مزید4 ارب 50 کروڑ روپے جو حکومت پاکستان سے مانگے جارہے ہیں وہ ان 2 برسوں میں واپس ہوجائیں گے۔ترجمان نے واضح کیا کہ 4 ارب50 کروڑ روپے کے مزید فنڈز صرف 3 مہینوں کی تنخواہوں اوریوٹیلٹی بلز کی ادائیگی کے لیے مانگے جارہے ہیں کیونکہ آئرن اوور کی خریداری کے لیے فنڈز دیر سے موصول ہونے کی وجہ سے 77 فیصد پیداوار کا ہدف 3 مہینے آگے چلا گیا ہے اور اس عرصے میں کیونکہ 77 فیصد پیداواری ہدف حاصل نہیں ہوسکے گا اس لیے یہ فنڈز اس عرصے میں تنخواہوں وغیر کے لیے ضروری ہوں گے، حکومت سے حاصل کی گئی مذکورہ 18.5 + 4.5 ارب رقم یعنی23 ارب روپے کم خسارے کی صورت میں آئندہ سال تک واپس مل جائے گی۔

مزید : کامرس