میو ہسپتال پُر اسرار طور پر ہلاک ہونے والی نرس کا قاتل ہسپتال کا ملازم نکلا

میو ہسپتال پُر اسرار طور پر ہلاک ہونے والی نرس کا قاتل ہسپتال کا ملازم نکلا

لاہور(کرائم سیل) میو ہسپتال میں تین روز قبل پرُسرارطورپر ہلاک ہونے والی نرس کی موت کا معمہ حل ہوگیا ،ملزم ہسپتال کا ملازم نکلا، تھانہ گوالمنڈی میں قتل کا مقدمہ درج ،ملزمان کی تلاش کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں ۔تفصیلات کے مطابق پرُسرار طورپر ہلاک ہونے والی میو ہسپتال کی نرس کا قاتل ہسپتال کا ملازم اوراس کے نامعلوم ساتھی نکلے ،پولیس نے مقتولہ کے لواحقین کی درخواست پرمقدمہ درج کرکے ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارنے شروع کردیے ہیں۔بتایا گیا ہے کہ مقتولہ نادیہ محمودکی منگنی رشتہ داروں میں ہو چکی تھی، ہسپتال کا ملازم تحسین اس سے شادی کا خواہشمند تھا اورملزم نے کئی بارمقتولہ کے گھراپنی بہن کو رشتہ کاپیغام دے کربھیجا مگر نادیہ کے گھروالوں نے یہ کہہ کرانکار کردیا کہ ہماری بچی کی منگنی ہو چکی ہے ،بارہا انکار کے بعدملزم تحسین نے د ھمکی د ی کہ اگرنادیہ میری نہیں ہو سکتی تو میں اسے کسی کا بھی نہ ہونے دوں گا۔مقتولہ کے لواحقین کے مطابق ملزم تحسین نے اپنی بہن اوردو نامعلوم ساتھیوں کے ہمراہ مل کراسے قتل کردیااورموقع سے فرارہو گئے۔ پولیس کے مطابق ملزم تحسین وقوعہ کے روز سے گھرسے غائب ہے اوراس کے گھرپرتالہ لگا ہوا ہے ،اس کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارے جا رہے ہیں ،اصل حقائق ملزم کی گرفتاری کے بعدہی سامنے آئیں گے۔

مزید : علاقائی