امریکہ بھارت تعلقات کسی کو نیچا دکھا نے کے لئے نہیں ہیں ‘وائٹ ہاؤس

امریکہ بھارت تعلقات کسی کو نیچا دکھا نے کے لئے نہیں ہیں ‘وائٹ ہاؤس

 واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک ،اے این این) وائٹ ہاؤس نے واضح کیا ہے کہ امریکہ اور بھارت کے تعلقات کسی کو نیچا دکھانے کیلئے نہیں، پاکستان کے ساتھ انتہائی مثبت مراسم ہیں جو مختلف سطح پرفروغ پارہے ہیں، امریکہ پاکستان اور بھارت کے درمیان مذاکرات کی حوصلہ افزائی کرتا ہے، چین کے سا تھ محاذ آرائی کا ارادہ رکھتے ہیں نہ ایسا کرنا ہمارے مفاد میں ہے۔ وائٹ ہاؤس کی قومی سلامتی کونسل میں جنوبی ایشیاء کے امور کے سینئر ڈائریکٹر فل رائینر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے صدر اوبامہ کے دورہ بھارت سے متعلق پاکستان اور چین سے سامنے آنے والی قیاس آرائیوں کو مسترد کیا۔ انہوں نے کہا کہ صدر اوبامہ اور وزیراعظم نریندر مودی کی دوطرفہ تعلقات مضبوط بنانے کی کوششیں کسی کو نیچا دکھانے کیلئے نہیں ہیں۔ میں نہیں سمجھتا کہ امریکہ یا بھارت چین کے ساتھ کسی محاذ آرائی کا ارادہ رکھتے ہیں اور نہ ہی ایسا کرنا ان کے مفاد میں ہے بلکہ ہم مل کر کام کرنا چاہتے ہیں اور یہی ہمارے مفاد میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ نے یہ واضح کیا ہے کہ وہ دونوں ملکوں کے ساتھ مضبوط تعلقات چاہتا ہے۔ انہو ں نے کہاکہ صدراوباماکے دورے کا بنیادی مقصدبھارت کی ترقی اورباہمی امور پر بات چیت تھا ۔ پاکستان کے حوالے سے ایک سوا ل کے جواب میں امریکی عہدیدار نے کہاکہ یقینی بات ہے کہ اوباما اور مودی کے درمیان خطے کی صورتحال کے حوالے سے تفصیلی بات چیت ہے جس میں یقینی طورپر پاکستان اور افغانستان کے امور بھی زیر بحث آئے جبکہ چین کا مذاکرات میں رسمی ذکر خطے کے حوالے سے تھا ۔ بھارت کے ساتھ ایٹمی معاہدے سے خطے کے عدم استحکام سے دو چار ہونے کے خدشات کومسترد کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ یہ صرف ایک معاہدہ ہے جو کافی سال پہلے طے پایاتھااوراس معاہدے پر عملدرآمد کے حوالے سیپیشرفت ہوئی ہے ۔پہلے سے طے شدہ معاہد ے پر عملدرآمد سے دفاعی توازن پر کوئی منفی اثر ات مرتب نہیں ہوں گے ۔

مزید : علاقائی