مائیکرو سافٹ ورڈ میں Autocorrectکا استعمال انتہائی خطرناک غلطیوں کو جنم دے سکتا ہے

مائیکرو سافٹ ورڈ میں Autocorrectکا استعمال انتہائی خطرناک غلطیوں کو جنم دے سکتا ہے
مائیکرو سافٹ ورڈ میں Autocorrectکا استعمال انتہائی خطرناک غلطیوں کو جنم دے سکتا ہے

  

نیویارک (نیوز ڈیسک) جس طرح انسانوں میں کچھ بری عادات ہوتی ہیں اسی طرح کچھ کمپیوٹر پروگرام بھی بری عادات کے حامل ہوتے ہیں اور ایک ایسی ہی عادت یا خرابی Copertino Effect کہلاتی ہے۔ اگر آپ کسی ایم ایس ورد میں ٹائپ کرتے ہوئے کوئی اوردو لفظ جیسا کہ Minar-e-Pakistan (مینار پاکستان) کی کوشش کریں یا اپنا نام لکھ دیں تو یہ پروگرام اس کے نیچے سرخ لکیر لگا کر اسے غلط قرار دے دے گا اور پھر اس کے متبادل ممکنہ درست الفاظ بھی دکھائے گا۔ پرانے کمپیوٹر پروگراموں میں یہ مسئلہ تھا کہ یہ خود ہی ”غلط“ الفاظ کو بدل کر ”صحیح“ الفاظ لکھ دیتے تھے اور جو بھی لفظ ان کی ڈکشنری میں نہ ہونا اسے غلط قرار دے کر اپنی مرضی کا لفظ اس کی جگہ لکھ دیتے۔

گوگل کی وہ سروس جس کے لیے پہلے 40ہزار روپے دینا پڑتے تھے،اب بالکل مفت

آج بھی کچھ کمپیوٹر پروگرام پر کام کرتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ ان کی وجہ سے درست الفاظ کی جگہ غلط الفاظ آجاتے ہیں۔ چند سال پہلے تک انگریزی لفظ Cooperation کو Co-operation لکھا جاتا تھا اور یہ پروگرام Cooperation کو غلط قرار دے کر اس کی جگہ امریکی شہر Cuppertino کا نام ٹھونس دیتے تھے اور یہی وجہ تھی کہ اس مسئلے کو Capertino Effect کا نام دیا گیا۔ کمپیوٹر پروگراموں کی اس بری عادت نے کئی سرکاری دستاویزات میں سارک تنظیم کا نام South Asian Association for Regional Cupertino کردیا حالانکہ آخری لفظ Cooperation ہونا چاہیے تھا۔ اسی طرح یہ پروگرام پاکستانی سیاسی جماعت "Muttahida Qaumi Movement" کی جگہ ”درست“ متبادل کے طور پر "Muttonhead Quail Movement" تجویز کرنے کی جسارت بھی کرتے رہے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس