زرعی اراضی جعلسازی سے فروخت او ر تعمیرات کیخلاف حکم امتناعی

    زرعی اراضی جعلسازی سے فروخت او ر تعمیرات کیخلاف حکم امتناعی

  



پشاور(نیوزرپورٹر) صوبائی محتسب نے چارسدہ میں خاتون کی زرعی اراضی جعلسازی سے فروخت کرنے اور وہاں تعمیرات کیخلاف حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے متعلقہ پولیس حکام سے جواب طلب کرلیا مسماۃ الف نے سیف اللہ محب کاکاخیل ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائر درخواست کی سماعت کی جس میں موقف اپنایا گیا ہے کہ امین اللہ نے چارسدہ میں اسکی 21 جریب اراضی کو جعلسازی سے بیچ ڈالی جس کے بعد درخواست گزارہ نے اونرشپ ایکٹ 2012 کے تحت اکتوبر2019میں درخواست جمع کی جس پر تاحال ایف آئی ار درج نہیں کی گئی انہوں نے بتایا کہ وہ عمررسیدہ خاتون ہے جو اسوقت پشاور میں گھر میں اکیلی رہائش پذیر ہے لہذا اسے انصاف فراہم کیا جائے صوبائی محتسب رخشندہ ناز نے دلائل سننے کے بعد21جریب اراضی پر تعمیرات اور کاشت روکنے کے احکامات جاری کردئیے جبکہ اس بات پر برہمی کا اظہار کیا کہ تاحال پولیس نے مقدمہ درج نہیں کیا جبکہ ڈپٹی کمشنر چارسدہ اور ڈی ایس پی سرڈھیری سے رپورٹ طلب کرتے ہوئے متعلقہ خاتون کو سکیورٹی بھی فراہم کرنے کے احکامات جاری کردیے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر