پشاور، ایل ایچ ڈبلیو کا صوابی میں ایل ایچ وی کے قتل کیخلاف مظاہرہ

پشاور، ایل ایچ ڈبلیو کا صوابی میں ایل ایچ وی کے قتل کیخلاف مظاہرہ

  



پشاور(سٹی رپورٹر)خیبرپختونخوا کے ایل ایچ ڈبلیو لیڈی ورکرز نے صوابی میں شہید ہونے والی لیڈی ہیلتھ ورکز کے واقعہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ واقع میں ملوث ملزمان کو قرار واقع سزا دی جائے اور صوبہ بھر میں دوران ڈیوٹی شہید ونے والے لیڈی ہیلتھ ورکرز کو شہداء پیکج دینے،شہداء کے ورثاء کو سرکاری ملازمت دینے،سپریم کورٹ کے فیصلہ کے مطابق ملازمین کو سروس سٹرکچر اور سنیارٹی دینے کیلئے اقدامات کیے جائے بصورت دیگر عدالت سے رجوع کرینگے ان خیالات کا اظہار لیڈی ہیلتھ ورکرز نے پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے کیا مظاہرین نے ہاتھو ں میں پلے کارڈذ اور بینرز اٹھا رکھے تھے۔مظاہرے کی قیادت لیڈے ہیلتھ ورکرز پروگرام خیبر پختونخوا کے عہدیداروں اور صوبائی پیرا میڈیکل ایسو سی ایشن خیبر پختونخوا کے صوبائی صدر سید روئیدارشاہنے کی۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صوبائی صدر روئیدار شاہ نے کہا کہ لیڈی ہیلتھ ورکرز ڈپارٹمنٹ شعبہ صحت میں ریڑھ کی ہڈی کی حثییت رکھتی ہے اورپچھلے کہی سالوں سے فرنٹلائن فورس کا کردار ادا کر رہی ہیں جو ماں اور بچے کی صحت کے حوالے سے خدمت انجام دے رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ پورے ملک میں لیڈ ی ہیلتھ ورکرز نے ہر قسم کے ہنگامی صورت ہال میں اپنے خدمات انجام دیے ہیں مگر بد قسمتی سے لیڈے ہیلتھ ورکرز کو انکے خدمات کا صلہ نہیں ملتا اور کچھ سازشیں عناصر ملک بھر میں لیڈے ہیلتھ ورکرز کو نشانہ بنا رہے ہیں اور دوران ڈیوٹی کہی لیڈی ہیلتھ ورکرز کو شہید کیا گیا تام حکومت انکے ورثاء کیلئے کچھ نہیں کرتی۔خیبر پختونخوا کی لیڈی ہیلتھ ورکرز نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ شہید ہونے والی لیڈی ہیلتھ ورکرز کو شہداء پیکج دیا جائے اور انکے بچوں کو سرکاری ملازمت اور اسکے ساتھ سول اعزاز کیلئے نامزد کیا جائے اور لیڈے ہیلتھ ورکزز کو تحفظ دیا جائے جبکہ کم تنخواہ سے گزارا مشکل ہے لہذاسپریم کورٹ کے فیصلہ کے مطابق سروس سٹرکچر اور سنیارٹی دی جائے بصورت عدالت سے رجوع کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر