سرکاری ملازمین کا سول سیکرٹریٹ کے باہر احتجاجی مظاہرہ

سرکاری ملازمین کا سول سیکرٹریٹ کے باہر احتجاجی مظاہرہ

  



 لاہور(خبر نگار) صوبے بھرکے سرکاری ملازمین نے اپنے مطالبات کی منظوری کے لئے حکومت کو تین روز تک کی ڈیڈلائن دے دی ہے اورمطالبات حل کرانے کے لئے باقاعدہ احتجاجی تحریک شروع کرنے کااعلان کر دیا اس سلسلہ میں سرکاری ملازمین نے گزشتہ روز صوبائی دارالحکومت سمیت پنجاب کے تمام اضلاع میں احتجاج کیا، لاہورمیں سول سیکریٹ کاگھیراؤکیا۔احتجاجی ریلی کا آغاز حاجی محمد ارشاد چوہدری،حاجی فضل داد،لالا محمد اسلم،محمد یونس بھٹی اوردیگر قائدین کی قیادت میں لوکل گورنمنٹ کمپلیکس ساندہ روڈ سے ہوا۔حاجی محمد ارشا دچوہدری نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت مذاکرات کی بجائے مطالبات پورے کرے اور تمام امتیازی سلوک ختم کرے۔

،اورسرکاری ملازمین کے یوٹیلٹی الاؤنس، گروپ انشورنس،ہاؤس ریکوزیشن، سیکرٹریٹ / ایگزیکٹو الاؤنس بلا امتیاز نوٹیفکیشن کرنے اور بناولنٹ فنڈ کی اضافہ شدہ مراعات میں کمی کا فیصلہ واپس لینے تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کیا۔ اپنے خطاب میں حاجی محمد ارشادچوہدری نے کہا اگر حکومت نے مطالبات تین دن کے اندر اندر منظورنہ کیے توپھراحتجاجی تحریک کا دائرہ کار بڑھادیاجائے گا

مزید : میٹروپولیٹن 1