لاہور کی 64فیصد آباد ی کو فضلہ ملے پانی کی سپلائی، نہانا بھی مشکل، بیماریا ں پھیل گئیں

لاہور کی 64فیصد آباد ی کو فضلہ ملے پانی کی سپلائی، نہانا بھی مشکل، بیماریا ں ...

  



لاہور(جاویداقبال)صوبائی دارالحکومت میں پینے کا صاف پانی نایاب ہوگیا، شہر کی64فیصد آبادیوں میں واسا نے گندا، بدبودار اور زنگ آلود پانی فراہم کرنا شروع کردیا ہے جبکہ شہری یہ پانی پینا تو درکنار اس سے غسل بھی نہیں کرسکتے مگر واسا اپنے پانی کی تعریفیں کرتا نہیں تھکتا مگر پانی کی حقیقت یہ ہے کہ اپنے آلودہ پانی سے خوفزدہ محکمہ کے ایم ڈی سمیت تمام افسر اپنا ہی پانی پینا چھوڑ گئے ہیں۔ یہ آفیسر خوداپنے دفاتر اور گھروں میں بوتل کا پانی استعمال کرتے ہیں اورصرف محکمہ واسا کا سربراہ ایم ڈی واسا کے دفتر میں ڈیلی تین ہزار روپے مالیت کا منرل واٹر پیا جاتا ہے اسی طرح تمام ڈی ایم جیز ڈائریکٹر ایڈمن سمیت تمام ٹریکٹرز ایکسیلینز اسی طرح تمام ایس ڈی اوز کلیریکل سٹاف کے دفاتر میں روزانہ 30 سے 35 ہزار کا پانی پیا جاتا ہے جبکہ شہریوں کو آلودہ پانی پینے پرمجبور کر رکھا ہے۔ یاد رہے کہ واسانے شہر میں صاف پانی کی فراہمی کے لیے مختلف علاقوں میں گیسٹرو پیکج کے تحت اربوں روپے خرچ کئے لیکن بدبودار پانی کی شکایت بھی انہیں علاقوں میں سب سے زیادہ ہے جس کے باعث واسا کی سب ڈویژن باغبان پورہ کے علاقے شادمان کالونی، مدینہ کالونی اور اس سے ملحقہ درجنوں آبادیوں کہ لوگ پینے کے صاف پانی کو ترس گئے ہیں۔ شمالی لاہور انجمن تحفظ شہریان کے رہنما ؤں حاجی غلام حسین،منہاس خالد، پرویز سدو، سابق ناظم حاجی شاہد محمود،خالد محمود مغل نے پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کے کہ ہمارے علاقوں میں صاف پانی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے اربوں روپے سے گیسٹروں پیکج کے تحت نئی پائپ لائن کاغذوں میں ڈالی گئی ہیں۔متعدد بار شکایات کی گئیں لیکن ناواساکا ایم ڈی سنتا ہے اور نہ ہی مقامی ایس ڈی او۔علاقے میں اس قدر بدبودار پانی آرہا ہے کہ یہ غسل کے قابل بھی نہیں ہے بعض اوقات تو پانی میں فضلہ آتا ہے۔آلودہ پانی کے حوالے سے راوی روڈ اور اس سے ملحقہ آبادیاں جن میں سمادی گنگا رام، ٹمبر مارکیٹ، قصور پورہ،امین پورہ، مرضی پورہ،مالا شکرگھڑیاں، داتا نگر،بادامی باغ، گھوڑے شاہ زیادہ متاثر ہیں۔اسی طرح شاہدرہ کی درجنوں آبادیاں جہاں راوی ٹاؤن کے ڈائریکٹر نے ایم ڈی واسا کی منظوری سے صاف پانی کی فراہمی کیلئے دو ارب روپیہ سے زائد فنڈ سے کاغذوں میں نئی پائپ لائینز بچھوائیں اور تمام پیسہ ہضم کرکے پرانی لائینوں کو ہی نئی ظاہر کردیا گیا۔ ملتان روڈ کی آبادی ڈولنوال،سید پور، پچھلا رحمن پورہ،سمن آباد کی کچی آبادیوں میں بھی صاف پانی میسر نہیں۔ اسی طرح کچی آبادی جمیل آباد،مغلپورہ بھگت پورہ میں بھی صاف پانی نایاب ہے۔

آلودہ پانی

مزید : صفحہ اول