کھلی منڈی میں گندم کی قیمت تفصیلات، آٹا چکی مالکان کی فہرست طلب

  کھلی منڈی میں گندم کی قیمت تفصیلات، آٹا چکی مالکان کی فہرست طلب

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے آٹا بحران کیس میں کھلی منڈی میں گندم کی قیمت کی تفصیلات اورآٹا چکی مالکان کی فہرست طلب کرلی ہے،چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے اس سلسلے میں دائر مختلف درخواستوں پرچکی مالکان ایسوسی ایشن سے حکومت کی پیشکش کا جواب بھی طلب کرلیا۔ عدالت میں حکومت کی طرف سے پیشکش کی گئی کہ سرکاری نرخ پرآٹا فروخت کیا جائے توچکی مالکان کو سرکاری نرخوں پر گندم فراہم کرنے کے لئے تیارہیں۔عدالت نے گراں فروشی کی بنیاد پربند کی گئی چکیوں کوفوری کھولنے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے چکی مالکان ایسوسی ایشن کے وکیل کو ہدایت کی کہ آئندہ سماعت پر تمام ممبران کی فہرست فراہم کی جائے،عدالت نے ان کویہ ہدایت بھی کی کہ آپ لوگوں کو محکمہ خوراک نے جو آفر دی اس پر جواب داخل کریں،آٹا بحران کے خلاف جوڈیشل ایکٹوازم پینل اور دیگر شہریوں کی طرف سے درخواستیں دائر ہیں جبکہ چکی مالکان ایسوسی ایشن کی طرف سے درخواست دائر کی گئی ہے کہ آٹا چکی مالکان کوبلاجواز ہراساں کیاجارہاہے اور متعدد چکیاں سیل کردی گئی ہیں، سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ لاہور میں 133 چکی مالکان رجسٹرڈ ہیں،انہیں 500 کلو گرام فی چکی گندم فراہم کی جارہی ہے،چکی مالکان ایسوسی ایشن کے وکیل نے اس بات کی تردید کی، سرکاری وکیل نے عدالت کوبتایا کہ جنوری کے پہلے ہفتے میں اوپن مارکیٹ میں گندم کا نرخ 1900 روپے فی من تھا۔جس پرفاضل جج نے آٹاچکی ایسوسی ایشن کے وکیل سے استفسار کیا کہ آٹا کی قیمت کیوں بڑھائی گئی؟سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ لاہور میں 3500سے 4000 آٹے کی چکیاں چل رہی ہیں جن میں سے 133رجسٹرڈ ہیں ڈائریکٹر فوڈنے کہا کہ گندم سستے داموں خریدنے کے باوجود آٹاچکی والوں نے آٹے کی قیمت ازخود بڑھا دی،مہنگاآٹافروخت کرنے پرآٹاچکی والوں کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی کی، دریں اثناء چیف جسٹس نے چینی کی قیمتوں میں اضافہ کے خلاف درخواستوں کی سماعت بھی 6فروری پر ملتوی کردی۔

آٹا فہرست

مزید : صفحہ آخر