کشمیرپرامریکی ثالثی قبول کرنا انتہائی افسوسناک، لیاقت بلوچ

  کشمیرپرامریکی ثالثی قبول کرنا انتہائی افسوسناک، لیاقت بلوچ

  



ملتان (سٹی رپورٹر)نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان وسینیٹر جنرل ملی یکجہتی کونسل لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ کشمیریوں کے عزم و حوصلے کے مقابلے میں بھارت شکست کھائے گا۔ کشمیر کی آزادی نوشتہ دیوار ہے پاکستانی حکمران ٹرمپ کی ثالثی کو قبول کرنے کی بجائے کشمیر پر قومی پالیسی تشکیل دیں اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق کشمیریوں کو حق خود ارادیت ملنا چاہئے۔5اگست کے بعد سے مقبوضہ کشمیر کو قید خانے میں تبدیل کردیا گیا ہے ہزاروں نوجوانوں (بقیہ نمبر42صفحہ7پر)

کو شہید، نابینا، خواتین کی عصمت دری کی گئی ہے مگر اس کے باوجود کشمیریوں کے حوصلے بلند ہیں 5فروری کو پوری پاکستانی قوم کشمیری پاکستان سمیت دنیا بھر میں سڑکوں پر نکل کو کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی اور بھارتی ظلم وجبر کے احتجاج کے خلاف احتجاج کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی ملتان کے زیر اہتمام ”یکجہتی کشمیر سیمینار“ سے صدارتی خطاب کرتے ہوئے کیا جس سے بزرگ سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی، سابق وفاقی وزیر سید حامد سعید کاظمی، مولانا محمد حنیف جالندھری، سابق صوبائی وزیر چودھری عبدالوحید آرائیں، ہائی کورٹ بار کے صدر ملک حیدر عثمان، امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب راؤ محمد ظفر، بابو نفیس انصاری،امیر جماعت اسلامی ملتان ڈاکٹر صفدر اقبال ہاشمی، صوبائی سیکر ٹری جنرل صہیب عمار صدیقی، علامہ اقتدار نقوی، ضلعی سیکر ٹری جنرل اطہر عزیز چودھری نے بھی خطاب کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ قوم میں یہ تاثر کیوں پیدا ہورہا ہے کہ کشمیر کا سودا کرلیا گیا اور کشمیریوں کو تنہا چھوڑ دیا گیا ہے؟ انہوں نے کہا کہ 9/11 کے بعد جس ذلت کا سامنا پاکستان کو کرنا پڑا ہے اس کے بعد بھی کشمیر پر امریکہ کی ثالثی کو قبول کرنا انتہائی افسوسناک اور قوم کے ساتھ زیادتی ہے۔370اور35-A کے خاتمے کے بعد مودی سندھ طاس معاہدے کو ختم کرنے کی دھمکی دے رہا ہے پاکستانی دریاؤں کا پانی بند کرکے پاکستان کی زمینوں کو بنجر بنانے کی باتیں کررہا ہے مگر ہمارے حکمران خواب غفلت میں پڑے ہوئے ہیں وہ سمجھتے ہیں امریکہ کشمیر کا مسئلہ حل کروائے گا۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے بھارت نے قوام متحدہ کی قرار دادوں کی خلاف ورزی کی ہے۔ اگر سلامتی کونسل کا بھارت کوممبر بنواکر خود اپنے پیروں پر کلہاڑی ماری ہے۔ شہریت کے قانون میں ترمیم کے خلاف بھارت کے مسلمان ہی نہیں انصاف پسند ہندو اور اقلیتیں سراپا احتجاج ہیں پاکستان کو اس کا فائدہ اُٹھانا چاہئے عالمی سطح پر مسئلہ کو اُجاگر کرنے اور حمایت حاصل کرنے کیلئے وزارت خارجہ اور سفارتی عملے کو متحرک کرے مسئلہ پر قومی پالیسی بنا کر ٹھوس اقدامات کرے اور قوم کو متحد کرے اس کیلئے لیڈر شپ کا بڑا وژن ہونے کی ضرورت ہیبزرگ سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ کشمیر ہمارا ہے اپنا سمجھ کر ہی یہ لڑائی ملڑنی چاہئے اسی صورت میں ہم کشمیر کو آزاد اور اپنا دفاع کرسکتے ہیں کشمیری آزادی کی جنگ ہی نہیں بلکہ پاکستان کی بقاء کی جنگ لڑ رہے ہیں کشمیر کت بغیر پاکستان نا مکمل ہے پاکستان کو کھل کر تحریک آزادی کشمیر کی حمایت کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں نے اپنی جان ومال، عزت سمیت ہر چیز کی قربانی دی ہے پاکستان نے اب تک کیا قربانی دی ہے؟ان کی جدوجہد آزادی کی سرکاری سطح پر حمایت کرنی چاہئے۔سابق وفاقی وزیرسید حامد سعید کاظمی نے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کے تمام ظلم وجبر کے باوجود کشمیریوں نے ہار نہیں مانی اپنی جدوجہد کو جاری رکھے ہوئے ہیں ہمیں اُن کا ہر محاذ پر ساتھ دینا چاہئے۔ہائیکورٹ بار کے صدر ملک حیدر عثمان نے کہا کہ کشمیر کے مسئلہ کا واحد حل اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عمل کرنا ہے جماعت اسلامی پاکستان اور مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی کشمیر کو منظم کیا ہے۔ ممتاز عالم دین مولانا قاری محمد حنیف جالندھری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ کشمیریوں کا ہی نہیں پاکستان اور اُمت مسلمہ کا ہے کشمیرپاکستان کی شہ رگ ہے جس کو دشمن کے حوالے نہیں کیا جا سکتا ہے۔ سابق صوبائی وزیر عبدالوحید آرائیں نے کہا کہ عالمی سازشوں کا شکار ہوکر مسئلہ کشمیر لپیٹ دیا گیا ہے او آئی سی کا کردار ہمیشہ امریکہ کی لونڈی کا رہا ہے۔ جماعت اسلامی کے علاوہ حکمرانوں اور سیاسی جماعتوں نے مسئلہ کشمیر پر اپنی ذمہ داریاں پوری نہیں کیں۔میر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب راؤ محمد ظفر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت نے کشمیر پر مجرمانہ غفلت کا ثبوتدیا ہے ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ بھارت سے تجارت کو مسئلہ کشمیر کے حل سے منسلک کرے بھارت کی ہوائی سروس بند کرے۔

لیاقت بلوچ

مزید : ملتان صفحہ آخر