نشتر ہسپتال، کینسر ٹریٹمنٹ سنٹرکا منصوبہ 9سال سے نامکمل، مریضوں کی سانسیں بند

    نشتر ہسپتال، کینسر ٹریٹمنٹ سنٹرکا منصوبہ 9سال سے نامکمل، مریضوں کی ...

  



ملتان، کوٹ ادو،بہاولپور،ڈیرہ،لودھراں،وہاڑی(وقائع نگار، بیورورپورٹ،نمائندگان پاکستان، سٹی رپورٹر،ڈسٹرکٹ رپورٹر،نامہ نگار)پولیس لائنز ملتان میں کینسر کے عالمی دن کے موقع پر اس مرض میں مبتلا افراد سے اظہار یکجہتی اور اس مرض سے بچاؤ کی آگاہی کے لیے تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ تقریب میں ایس ایس پی آپریشنز ملتان محمد کاشف اسلم، ایس ایس پی انویسٹی گیشن ملتان ربنواز تلہ، (بقیہ نمبر9صفحہ12پر)

ایس پی ہیڈ کوارٹرز طلعت حبیب، ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹر محمد اقبال لاشاری اور دیگر پولیس افسران شریک ہوئے۔ تقریب کے مہمان خصوصی وائس چانسلر نشتر ہسپتال ڈاکٹر اعجاز مسعود تھے۔ میڈیکل آفیسر پولیس لائنز ملتان ڈاکٹر محمد حسن، میڈیکل ڈائریکٹر سندس فاونڈیشن ملتان ڈاکٹر سہیل اقبال، ذوالقرنین قریشی ایڈمنسٹریٹر سندس فاونڈیشن اور دیگر شریک ہوئے۔ تقریب میں اسپائر گروپ آف کالجز اور پولیس پبلک سکول ملتان کے سٹوڈنٹس بھی شریک ہوئے۔ تقریب کا آغاز تلاوت کلام پاک اور نعت رسول مقبول صلی اللہ علیہ وسلم سے کیا گیا. اس کے بعد کینسر کے مرض میں مبتلا پولیس افسر محمد جاوید نے اپنے خیالات کا اظہار کیا اور اور اس مرض سے بچاؤ کے حوالے سے آگاہی دی۔ تقریب کے مہمان خصوصی وائس چانسلر نشتر ہسپتال ڈاکٹر اعجاز مسعود نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کینسر لاعلاج مرض نہیں ہے۔ جلد تشخیص اور بروقت علاج سے اس مرض سے نجات ممکن ہے۔ انہوں نے کہا کہ سگریٹ، پان، نسوار اور اور دیگر نشہ ا?ور ادویات اس مرض کا باعث بن سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اپنی طرز زندگی اور کھانے پینے میں میانہ روی اختیار کریں۔سٹی پولیس ملتان کی طرف سے بلڈ کیمپ قائم کیا گیا ہے جس میں پولیس افسران کی کثیر تعداد نے خون کے عطیات دیے۔پٹرولنگ پولیس ملتان ریجن کے زیر اہتمام عالمی کینسر ڈے کے موقع پر کینسر سے متعلق آگاہی مہم اور بلڈ ڈونیشن فراہم کرنے کے حوالے سے ایک سمینار کا انعقاد ریجنل آفس ملتان,لودھراں,خانیوال, پاکپتن اور ساہیوال میں کیا گیا۔جس میں ایس پی زبیدہ پروین نے ضلع ساہیوال کے سیمینار میں شرکت کی۔اس موقع پر ملتان ریجن کے جملہ افسران و ملازمان نے بھرپور انداز میں شرکت کی۔ ڈی ایس پی غلام احمد بودلہ موبائل ایجوکیشن یونٹ انچارج محمد الیاس, رمضان سعیدی عبدالمالک ریڈر ظفراقبال بلوچ ڈی ای او شعیب شامل ہوئے۔ سمینار میں نشتر ہسپتال ملتان کے کینسر کے ماہر میڈیکل آفیسر سندس فاؤنڈیشن ڈاکٹر سہیل اور ان کی ٹیم نے شرکاء کو کینسر سے متعلق بڑی وجوہات علامات اور کینسر سے بچاؤ کے اصولوں کے بارے میں بریف کیا اور کینسر سے متعلق آگاہی لیکچر دیا۔کینسر سے بچاو کا گزشتہ روز عالمی دن لیکن "نوارٹس فارما" کے تحت کینسر کے 5 ہزار مریضوں کو فراہم کی جانے والی علاج کی سہولت غیر یقینی صورتحال سے دو چار ہے، پی ٹی ائی حکومت نے اپنے قیام سے اب تک کینسر کے مفت علاج کیلئے ایک پائی بھی نہیں دی۔بلڈ کینسرکر انک مائیولائیڈ لیوکیمیا کے مریضوں کو مفت علاج کی فراہمی کیلئے سابق حکومت کی جانب سے نوارٹس فارما کے تعاون سے 2014 میں شروع ہونے والا سی ایم ایل پراجیکٹ بزدار سرکار کی ہٹ دھرمی اور بے حسی کا شکار بن گیا۔ بزدار سرکار نے گزشتہ دو برسوں کے دوران سی ایم ایل پراجیکٹ کے تحت رجسٹرڈ کینسر کے پانچ ہزارمریضوں کو مفت علاج کی فراہمی کیلئے سوا دو ارب کے بقایا جات ادا نہیں کئے ہیں۔کینسر کے خلاف عالمی دن گزشتہ روز (منگل) کو منایا گیا ہے۔اس مرض کے خلاف عوام میں آگہی بیدار کرنے کے لئے ملتان سمیت دنیا بھر میں مختلف تقریبات اور سمیانر منعقد ہوئیں ہیں۔۔ایک رپورٹ کے مطابق کینسر کی وجہ سے دنیا میں ایک کروڑ 50 لاکھ افراد اس مرض کا شکار ہو کر مر سکتے ہیں۔جسمیں سے 70 فیصد اموات پاکستان اور دیگر ترقی پذیر ممالک میں ہوں گی۔ کینسر کی تمام اقسام میں بریسٹ کینسر،جگر،گلے کا کینسر زیادہ عام ہیں۔اسکے علاوہ سگریٹ نوشی کے سبب پھیپھڑوں جبکہ پان،نسوار،بیڑے،چھالیہ،گٹکے کے سبب منہ کے کینسر کی شرح بھی تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ایک رپورٹ کے مطابق 4 سے 17 فیصد پاکستانی ہیپاٹائٹس بی اور سی میں مبتلا ہیں۔جن میں سے بیشتر کا مرض بگڑ کر جگر کے کینسر میں تبدیل ہوجاتا ہے۔نشتر ہسپتال میں 100 بستروں پر مشتمل کینسر ٹریٹمنٹ سنٹر کا منصوبہ بھی 9 سال سے التوا کا شکار ہے۔اس منصوبے کا سنگ بنیاد اس وقت کے وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی نے 13 مارچ 2011 کو رکھا تھا۔بعد ازاں سابق گورنر پنجاب رفیق رجوانہ نے منصوبے کا دوبارہ سنگ بنیاد رکھا۔مگر فنڈز کی کمی آڑے آنے کے سبب عمارت ہی مکمل نہیں ہو سکی۔کینسر ٹریٹمنٹ سنٹر کے لئیکروڑوں روپے مالیت سے خریدی گئی لینئیر ایکسی لیٹر (linear accelator) نامی مشین بھی ڈبوں میں بند پڑی ہے اور اسے انسٹال نہیں کیا جا سکا ہے۔دوسری جانب مریضوں کی تعداد میں روز بروز اضافے،ملتان سمیت جنوبی پنجاب اور دیگر تین صوبوں سے آنے والے کینسر کے مریضوں کے لئے نشتر ہسپتال کا کینسر وارڈ کم پڑ چکا ہے۔بیسمنٹ میں ہونے کی وجہ سے شعبہ امراض کینسر محدود سطح پر سہولیات فراہم کر رہا ہے۔ریڈیو تھراپی یونٹ آوٹ ڈور بلاک کے نزدیک واقع ہے۔ایک جگہ پر طبی سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے کینسر کے مریض شدید پریشانی کا سامنا کرتے ہیں اور کینسر کے مریضوں کے لئے بار بار تشخیصی ٹسٹوں کی ضرورت پڑنے کے باوجود الگ سے لیب دستیاب نہیں ہے۔کینسر کے مریضوں کو تشخیصی ٹسٹ کروانے کے لئے بھی سنٹرل لیب میں طویل قطاروں میں لگ کر تکلیف دہ مراحل سے گزرنا پڑتا ہے۔مفت ایم آر آئی،سی ٹی سکین،تشخیصی ٹسٹ کروانے کے لئے نشتر انتظامیہ کے دفتر کے کئی چکر لگوانے کے بعد بھی مشکل سے ٹسٹ مفت ٹسٹ تجویز کئیجاتے ہیں۔کینسر کے مریضوں کو مفت ادویات بھی نہیں ملتیں۔مہنگی ادویات انہیں بازار سے خریدنا پڑتی ہیں۔مزید برآں محکمہ صحت ملتان میں بھی کینسر سے متعلق آگاہی و واک بھی منعقد ہوئی ہے۔ ڈی پی او مظفرگڑھ ندیم عباس کی طرف سے ڈسٹرکٹ پولیس لائنز میں کینسر کے عالمی دن کے موقع پر خون عطیہ کرنے کیلئے کیمپ کا انعقاد کیا گیا جہاں ایس پی ای نوسٹی گیشن چوہدری سجاد احمد گجر اور ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹرز سعداللہ خان نے شرکت کی، پولیس لائنز میں بلڈ ڈونیشن کیمپ میں ملازمین کی کثیر تعداد نے شرکت جہاں ملازمین کی مکمل سکریننگ کی گئی اور سکریننگ کے بعد پولیس ملازمین نے خون عطیہ کیا، پولیس ملازمین کے ساتھ ساتھ ریسکیو 1122 اور سول سوسائٹی کے لوگوں نے بھی خون عطیہ کیا، پولیس لائنز میں پولیس افسران و ملازمین، 1122 ملازمین اور سول سوسائٹی کے ساتھ ساتھ درجہ چہارم کے ملازمین نے بھی خون کا عطیہ دے کر مثال قائم کی۔ایڈیشنل انسپکٹر جنرل پنجاب ہائی وی پٹرولنگ کی ہدایت پر عالمی کینسر دن کے موقع پر DS/PHP بختیار احمد کی سربراہی میں ریجنل دفتر پٹرولنگ بہاولپور میں سیمینار کا انعقاد کیا گیا۔

جس میں ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ آنکالوجی سول اسپتال ڈاکٹر سیف الرحمن،ڈاکٹر فیصل ڈاکٹر زاہد کے ہمراہ شریک ہوئے۔دفتر چیف ایگزیکٹو آفیسر ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی بہاول پور میں عالمی یوم سرطان (کینسر) کے سلسلے میں ایک سیمینار کا انعقاد کیا گیا۔ شرکاء میں لیڈی ہیلتھ ورکر، وزیٹر اور سپروائزر شریک ہوئے۔ سیمینار کی صدرات ڈسٹرکٹ ہیلتھ ایجوکیشن آفیسر ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی بہاول پور ذوالقرنین جتوئی نے کی۔ مقررین میں سکول ہیلتھ نیوٹریشن سپروائزرمحمدانور چوہدری اور پروگرام آفیسر آئی آر ایم این سی ایچ اینڈ نیوٹریشن پروگرام بلال الیاس شامل تھے۔ ڈسٹرکٹ ہیلتھ ایجوکیشن آفیسر ذوالقرنین جتوئی نے عالمی یوم سرطان کے موضوع ”میں ہوں اور میں رہوں گا“‘ کے پس منظر میں بات کی۔ انہوں نے کہا کہ اس موضوع کو عملی جامہ پہنانے کے لیے ہمیں کینسر کے متعلق آگاہی، اس کی روک تھام، جلد تشخیص اور معیاری طریقہ علاج کی ضرو رت ہے جس میں مریض کا حوصلہ بڑھانا اور زندگی کے دھارے میں شامل کرنا ہماری کوششوں کا نتیجہ ہونا چاہئے۔یہ اس صورت ممکن ہے کیونکہ یہ مرض پوری دنیاکی طر ح پاکستان میں بھی پھیل رہا ہے اس لیے اس کی روک تھام بہت ضروری ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے اعداد وشمار کے مطابق90ملین لوگ ہر سال اس مرض سے ہلاک ہو جاتے ہیں اور2030تک اس کی تعداد ڈبل ہوسکتی ہے۔ ان میں سے70فیصد اموات ترقی پذیر ممالک جن میں پاکستان بھی شامل ہے، ہورہی ہیں۔ ورلڈ کینسر ڈے کے حوالے سے آئی سی آئی لائف سائنسز کے زیر اہتمام ٹیچنگ ہسپتال کے سرجیکل وارڈ کانفرنس ہال میں آگاہی سیمینار منعقد ہوا جس میں ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹر عظیم خان،ڈاکٹر مجید اللہ بزدار،اسسٹنٹ پروفیسرز ڈاکٹر حفیظ اللہ لغاری،ڈاکٹر عمران عاصم،ڈاکٹر نذر فرید،ڈاکٹر فدا حسین،ڈاکٹر زبیر کھوکھر،ڈاکٹر عمیر معصومی،ڈاکٹر مرید،ڈاکٹر مجاہد،ڈاکٹر صفدر،ڈاکٹر کرن،ڈاکٹر عبد المنان،ڈاکٹر تسمیہ،ڈاکٹر ردا فاطمہ،ڈاکٹر زرناب مظہر،ڈاکٹر عامر شہزاد،ڈاکٹر راشد علی،ڈاکٹر غلام حسین بزدار،ڈاکٹر ثقلین،ڈاکٹر محمد عمران،ڈاکٹر صدام،ڈاکٹر اظہر،ڈاکٹر حیدر،ڈاکٹر سیماب سلیم،ڈاکٹر سونیا محسن،ڈاکٹر اکرام نیازی،ڈاکٹر سدرہ،ڈاکٹر سمانہ سمیت دیگر نے شرکت کی سیمینار میں بریسٹ کینسر کے حوالے سے شرکا ء کو بتایا گیا کہ ہر مرض قابل علاج ہے اس سے مقابلہ کر کے صحت مند زندگی گزاری جا سکتی ہے آئی سی آئی کے نمائندہ نعیم اقبال نے شرکاء کا شکریہ اداکیا اور کمپنی کی طرف سے اس مرض کے خلاف مکمل جدو جہد کا اعلان کیا.پنجاب پولیس آپ کے جان مال اور عزت آبرو کے ساتھ کینسر کے خلاف جنگ میں بھی میدان میں آچکی ہے ہسپتالوں میں موت سے لڑتے افراد کو ہمارا خون زندگی کی آس دیتا ہے ان خیالات کا اظہارڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سید کرار حسین نے جاوید اسلام شہید پولیس لائن میں منعقدہ کینسرڈے کے حوالے سے کیمپ اور سیمینار سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ڈی پی او سید کرار حسین نے کہا کہ آئی جی پنجاب شعیب دستگیر نے بطور کمانڈر محکمہ میں پہلی بار پولیس کو اس نیک مقصد کیلئے متحرک کیاتاکہ پولیس بھی خدمت خلق کے کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے۔سمینار میں صو بائی وزیر جیل خانہ جات زواروڑائچ،ڈپٹی کمشنر عمران قریشی سمیت پولیس افسران و ملازمین اور طلبہ کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔سمینار کا آغاز تلاوت کلام پاک اور نعت رسول مقبول سے کیا گیاسمینار میں انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب شعیب دستگیر کا پیغام پڑھ کر سنایاگیا اور پروجیکٹر پر دیکھایا گیا۔ پولیس کے جوان اپنا خون عطیہ کرنے پولیس لائن آئے۔سیمنار سے خطاب کر تے ہوئے صوبائی وزیر جیل خانہ جات زوار وڑائچ نے کہا کہ خون عطیہ کرنا ایک بڑی نیکی اور ثواب کا کام ہے اس سے زندگیاں بچتی ہیں خون کا عطیہ مجبوری نہیں اللہ کی رضا کے لیے دیں ہماری اس چھوٹی سی نیکی میں معاشرے کے کسی نہ کسی فرد کی خوشی وابسطہ ہے ڈپٹی کمشنر عمران قریشی نے کہا کہ کسی بھی ضرورت مند مریض کو خون عطیہ کرنا صدقہ جاریہ میں شمار ہوتا ہے قیمتی جانوں کا تحفظ کرنا اور خون کا عطیہ دے کر قمیتی جانیں بچانا بھی ایک بڑی عبادت ہے اور ڈی پی او سید کرار حسین نے آج یہ کیمپ لگا کر نہ صرف یہ بتایا کہ پولیس لو گوں کی جان و مال اور عزت و آبرو کے ساتھ ساتھ کینسر کے خلاف جنگ میں بھی میدا ن میں آ چکی ہے ہمارے ملک کے پولیس جوانوں میں انسانیت کی خدمت کابھرپورجذبہ ہے۔سیمنار سے خطاب کر تے ہوئے ڈی پی او سید کرار حسین نے کہا کہ کسی بھی ضرورت مند مریض کو خون عطیہ کرنا صدقہ جاریہ میں شمار ہوتا ہے جبکہ کسی دوسرے انسان کی مدد سے قدرت الٰہی کی جانب سے قلبی سکون و راحت حاصل ہوتی ہے۔ پولیس لائن بہاول پورمیں ضلعی پولیس کے زیر انتظام کینسر کے عالمی دن کے موقع پر کینسر آگاہی و عطیہ خون کیمپ کا انعقاد کیا گیا۔جس میں ریجنل پولیس آفیسر فیاض احمددیو اورڈسٹرکٹ پولیس آفیسر محمدصہیب اشرف نے شرکت کی۔ریجنل پولیس آفیسر فیاض احمددیو نے کہا کہ کینسر ایک موذی مرض ہے، جس گھر میں یہ مرض جاتاہے وہ بہت تکلیف میں ہوتے ہیں۔ہمارا مذہب ہمیں تعلیم دیتا ہے کہ ہم دکھی انسانیت کی خدمت کو اپنا شعار بنائیں اور پولیس فورس دکھ کی ہر گھڑی میں اپنی عوام کے ساتھ شانہ بشا نہ کھڑی ہو تی ہے۔ آیئے ہم اس مہلک مرض کی آگاہی اورخون عطیات میں اپنا حصہ شامل کریں تاکہ ہماری اس کاوش سے کسی کی جان کو بچایا جا سکے۔تقریب میں آرپی او نے کینسر کے حوالے سے انسپکٹر جنرل آف پولیس پنجاب شعیب دستگیر کے دئیے گئے پیغام کو بھی پڑ ھ کر سنایا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس مرض میں مبتلا آفیسران اور جوانوں کی بھر پور مدد کی جائیگی۔بعد ازں ریجنل پولیس آفیسر فیاض احمد دیو نے پولیس جوانوں کے ہمراہ خون کا عطیہ بھی دیا۔تقریب میں بہاول وکٹوریہ ہسپتال بہاول پور کے ریجنل بلڈ سنٹر کی ٹیم کے ممبران نے کینسر کی علامات، بچاؤ اور حفاظتی تدابیر کے بارے شرکاء تقریب کو آگاہ کیا اور خون کا عطیہ دینے کے فوائد بھی بتائے۔آئی جی پنجاب شعیب دستگیر کی ہدایت پر وہاڑی پولیس لائن میں بھی پولیس کے جوانوں نے کینسر کے عالمی دن پر خون کا عطیہ دیا جبکہ ڈی پی او اختر فاروق خون کا عطیہ دینے میں پیش پیش رہے واقعات کے مطابق گزشتہ روز آئی جی پنجاب شعیب دستگیر کی ہدایت پر کینسر کے عالمی دن پر وہاڑی پولیس لائن میں بھی کینسر کے مریضوں کے لئے خون کا عطیہ دینے کیلئے تقریب منعقد کی گئی سب سے پہلے خون کا عطیہ پولیس کمانڈر ڈی پی او اختر فاروق نے دیا ان کا کہنا تھا کہ پولیس کا کام ہی عوام الناس کی جان بچانا ہے انہوں نے کہ ہم صرف آج کے دن کے لئے ہی نہیں خون کا عطیہ دے رہے بلکہ جب جب عوام کو ہمارے خون کی ضرورت پڑی ہم گریز نہیں کریں گے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر