’میں سربکف ہوں لڑا دے کسی بلا سے مجھے‘،عمران خان نے وزیراعظم آزاد کشمیر کو یہ بات کیوں کہی؟

’میں سربکف ہوں لڑا دے کسی بلا سے مجھے‘،عمران خان نے وزیراعظم آزاد کشمیر کو ...
’میں سربکف ہوں لڑا دے کسی بلا سے مجھے‘،عمران خان نے وزیراعظم آزاد کشمیر کو یہ بات کیوں کہی؟

  



مظفرآباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان کسی بلا سے ٹکرانے کیلئے تیار ہیں، اس خیال کااظہارانہوں نے ایک شعر کی صورت میں آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب کے دوران کیا۔

تفصیلات کے مطابق آزادکشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ وزیراعظم آزاد کشمیر کی ایک بات کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ ایک جمہوریت پسندانسان ہیں اور وہ اس لئے جمہوری ہیں کیونکہ دنیا بھر میں یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ جمہوریت کی جتنی بھی بری شکل ہووہ بہرحال باقیوں سے بہتر نظام ہے۔جہاں جہاں جمہوریت اور میرٹ ہے وہاں خوشحالی ہے۔

انہوں نے کہا اگر آج ہم دنیا کے سب سے زیادہ خوشحال اور غریب ملکوں کا جائزہ لیا جائے تو یہ نتیجہ نہیں نکلے گاکہ وہاں وسائل ہیں تووہ اس لئے امیر ہے، بلکہ خوشحالی کی وجہ میرٹ ہے۔

انہوں نے راجہ فاروق حیدر کے مفاہمت سے متعلق اشعار کا جواب بھی شاعری میں دیا،

عمران خان نے عدیم ہاشمی کی ایک غزل کا شعر پڑھتے ہوئے کہا کہ

’مفاہمت نہ سکھا جبر ناروا سے مجھے

میں سربکف ہوں لڑادے کسی بلا سے مجھے‘

عمران خان نے اپنی کسی بھی تقریر میں شاید پہلی بار ہی کوئی شعر سنایا ہے، تاہم انہوں نے ایسے شعر کا انتخاب کیا جس میں جوش و ولولہ کا عنصر زیادہ پایا جاتا ہے۔

عمران خان کا مزید کہناتھاکہ اگر کوئی میرے گھر سے چوری کرے توکیا میں اس سے دوستی کرلوں؟ انہوں نے کہا میری کسی سے ذاتی دشمنی نہیں ہے تاہم انہیں ملک کا پیسہ چوری کرنے والوں سے مفاہمت کا نہ کہا جائے۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /آزاد کشمیر