کرونا وائرس کے مشتبہ بھارتی مریض کا ’قرنطینہ‘ میں جانے سے انکار، پھر پنجاب پولیس نے ایسا کام کردیا کہ آپ کو بھی بے حدحیرت ہوگی

کرونا وائرس کے مشتبہ بھارتی مریض کا ’قرنطینہ‘ میں جانے سے انکار، پھر پنجاب ...
کرونا وائرس کے مشتبہ بھارتی مریض کا ’قرنطینہ‘ میں جانے سے انکار، پھر پنجاب پولیس نے ایسا کام کردیا کہ آپ کو بھی بے حدحیرت ہوگی

  



نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی پنجاب میں کورونا وائرس کے ایک مشتبہ مریض نے قرنطینہ (طبی قید)میں رہنے سے انکار کر دیا جس پر مقامی حکام نے پنجاب پولیس کی مدد طلب کر لی جس نے اس شخص کو گرفتار کرکے ہسپتال میں ڈال دیا اور اب اس پر ٹھیکری پہرا لگا رکھا ہے۔ انڈین ایکسپریس کے مطابق یہ 38سالہ شخص کینیڈا سے براستہ چین بھارت پہنچا تھا۔ شنگھائی ایئرپورٹ پر اس نے 9گھنٹے قیام کیا۔ نئی دہلی ایئرپورٹ پہنچنے پر اس کے ٹیسٹ کیے گئے اور کلیئر ہو کر وہ فرید کوٹ میں واقع اپنے قصبے کوٹک پورہ چلا گیا۔

چند دن بعد اس نے کورونا وائرس کے لیے قائم کردہ ہیلپ لائن پر فون کرکے بتایا کہ اسے بخار ہو گیا ہے اور شدید کھانسی آ رہی ہے جس پر اسے فرید کوٹ کے گرو گوبند سنگھ میڈیکل کالج اینڈ ہاسپٹل چیک اپ کے لیے لیجایا گیا اور اسے تین ہفتے کے لیے الگ تھلگ رکھنے کی کوشش کی گئی لیکن اس نے ہسپتال میں رہنے سے انکار کر دیا اور گھر چلا گیا۔ اس پر ضلع فرید کوٹ کے کمشنر کمار سوربھ نے ایس پی کو لکھا کہ اس شخص کو گرفتار کرکے کورونا وائرس کے مشتبہ مریضوں کے لیے بنائے گئے مخصوص وارڈ میں منتقل کیا جائے۔ چنانچہ پولیس نے اس شخص کو گھر سے گرفتار کرکے ہسپتال میں لا کر اس وارڈ میں بند کر دیا۔ پولیس اہلکار اب بھی وارڈ کے باہر مسلسل نگرانی کر رہے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ اس شخص کے خون کے نمونے ٹیسٹ کے لیے پونے لیبارٹری بھجوا دیئے گئے ہیں جہاں سے 72گھنٹوں میں رپورٹ آئے گی اور پتا چل سکے گا کہ اس میں کورونا وائرس موجود ہے یا نہیں۔

مزید : بین الاقوامی