1947ءسے لے کر اب تک ہر حکومت اقلیتوں کو ان کے حقوق فراہم کرنے میں ناکام رہی: جان قادر

1947ءسے لے کر اب تک ہر حکومت اقلیتوں کو ان کے حقوق فراہم کرنے میں ناکام رہی: جان ...
1947ءسے لے کر اب تک ہر حکومت اقلیتوں کو ان کے حقوق فراہم کرنے میں ناکام رہی: جان قادر

  

دبئی (طاہر منیر طاہر) پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق اور ان کے تحفظ کے لئے جو بل پیش کیا گیا اسے مولانا عبدالغفور حیدری نے رد کرکے یہ ثابت کردیا ہے کہ کوئی بھی پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق و تحفظ کے لئے مخلص نہیں ہے۔ پاکستان مسلم لیگ اقلیتی ونگ کے صدر و اقلیتی رہنما جان قادر اور دیگر مسیحی رہنماﺅں صائمہ سیموئیل، پاسٹر افضال بھٹی، پاسٹر امجد فاروق، مسرت بشیر، سرفراز گل اور جیکب حاکم دین نے کہا ہے کہ جب سے پاکستان معرض وجود میں آیا ہے تب سے اقلیتوں کے حقوق صلب کئے جارہے ہیں اور اب تک جتنی بھی حکومتیں آئی ہیں سب نے اقلیتوں کے حقوق کو نہیں مانا بلکہ اقلیتوں کو دبانے کی کوشش کی ہے۔

اقلیتی نمائندوں نے کہا کہ قیام پاکستان کے وقت مسیحیوں نے بھی تگ و دو کی اور اپنی قربانیاں پیش کیں۔ قیام پاکستان کے دوران ہمارا کردار مثالی رہا جبکہ بعدازاں پاکستان کی ترقی خوشحالی اور اس کے استحکام کے لئے بھی ہمارے کار ہائے نمایاں موجود ہیں۔ ہم پاکستان کے ساتھ مخلص ہیں، سچے اور کھرے پاکستانی ہیں اور اس کے استحکام و تحفظ کی خاطر اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے کے لیے بھی حاضر ہیں لیکن اس کے باوجود اقلیتوں کو ان کے حقوق نہ دینا اقلیتوں کے ساتھ سراسر زیادتی اور ناانصافی ہے۔

مسیحی رہنماﺅں نے کہا کہ سینیٹر کنشوبائی نے سینیٹ کا بائیکاٹ کر کے یہ ثابت کردیا ہے کہ وہ اپنی قوم کے ساتھ مضبوطی سے کھڑی ہیں کنشوبائی کے اس اقدام کو ہم تمام مسیحی سراہتے ہیں اور ان کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ اقلیتی رہنماﺅں نے ایک بار پھر اپیل کی ہے کہ پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ کیا جائے۔

مزید :

عرب دنیا -تارکین پاکستان -