راولپنڈی ٹیسٹ، جنوبی افریقہ کی بیٹنگ لائن مشکلات کا شکار

راولپنڈی ٹیسٹ، جنوبی افریقہ کی بیٹنگ لائن مشکلات کا شکار
راولپنڈی ٹیسٹ، جنوبی افریقہ کی بیٹنگ لائن مشکلات کا شکار
سورس:   Twitter

  

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان اور جنوبی افریقہ کے مابین راولپنڈی ٹیسٹ میچ میں قومی ٹیم کی پہلی اننگز کے جواب میں پروٹیز کی بیٹنگ جاری ہے جس نے تین وکٹوں کے نقصان پر 55 رنز بنا لئے ہیں، فاسٹ باﺅلر حسن علی نے لگاتار دو گیندوں پر وکٹیں حاصل کر کے پروٹیز کو مشکل میں ڈال دیا۔ 

تفصیلات کے مطابق راولپنڈی کرکٹ سٹیڈیم میں کھیلے جا رہے میچ میں قومی ٹیم کی پہلی اننگز کے 272 رنز کے جواب میں جنوبی افریقہ کے ڈین ایلگر اور ایڈن مارکرم نے اننگز کا آغاز کرتے ہوئے 26 رنز کا آغاز فراہم کیا تاہم اس موقع پر حسن علی نے اپنا جادو چلاتے ہوئے ڈین ایلگر کو محمد رضوان کے ہاتھوں کیچ کروا دیا، انہوں نے 15 رنز بنائے۔ 

اگلی ہی گیند پر انہوں نے ریسی وینڈرڈوسن کو بھی کلین بولڈ کر دیا اور یوں ناصرف پاکستان کو یکے بعد دیگرے کامیابیاں دلائیں بلکہ ہیٹ ٹرک چانس بھی حاصل کر لیا ہے۔ پاکستان کو تیسری کامیابی بیٹنگ میں شاندار کارکردگی دکھانے والے فہیم اشرف نے دلائی اور 55 کے مجموعی سکور پر فاف ڈوپلیسی کو محمد رضوان کے ہاتھوں کیچ کروا دیا، وہ 33 گیندوں پر تین چوکوں کی مدد سے صرف 17 رنز بنانے میں کامیاب ہو سکے۔ 

قبل ازیں پاکستانی ٹیم پہلی اننگز میں 272 رنز بنا کر آﺅٹ ہو گئی ہے، کپتان بابراعظم نے سب سے زیادہ77 رنز بنائے جبکہ فہیم اشرف نے 66 رنز کی ناقابل شکست اننگز کھیلی۔ میچ کے پہلے روز بارش کے باعث وقت سے پہلے کھیل ختم کر دیا گیا تھا اور پاکستان نے تین وکٹوں کے نقصان پر 145 رنز کے ساتھ دن کا اختتام کیا لیکن آج جب قومی ٹیم کے کپتان بابراعظم اور فواد عالم نے دوبارہ اننگز کا آغاز کیا تو دونوں ہی کھیل کے آغاز میں ہی آﺅٹ ہو گئے جس کے باعث قومی ٹیم کی پوزیشن کمزور ہوتی نظر آنے لگی جبکہ اس وقت پاکستانیوں کو اور بھی مایوسی ہوئی جب 190 کے مجموعی سکور پر وکٹ کیپر محمد رضوان بھی پویلین لوٹ گئے، وہ 68 گیندوں پر محض 18 رنز بنانے میں کامیاب ہو سکے۔ 

پاکستان کی چھ وکٹیں گرنے کے بعد آل راﺅنڈر فہیم اشرف نے ذمہ دارانہ بلے بازی کرتے ہوئے ناصرف اپنی نصف سنچری مکمل کی بلکہ ٹیم کی ڈوبتی کشتی کو بھی سہارا دیا اور 66 رنز بنا کر ناقابل شکست رہے تاہم دوسرے اینڈ سے وکٹیں گرتی رہیں۔ دیگر بلے بازوں میں حسن علی آٹھ، یاسر شاہ آٹھ، نعمان علی آٹھ اور شاہین شاہ آفریدی کوئی سکور نہ بنا سکے۔ 

جنوبی افریقہ کی جانب سے اینرچ نورٹجے سب سے کامیاب باﺅلر رہے جنہوں نے 24.3 اوورز میں 56 رنز کے عوض پانچ کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی جبکہ کیشو مہاراج نے تین اور ویان ملڈر نے ایک وکٹ حاصل کی۔ 

واضح رہے کہ پاکستان نے راولپنڈی ٹیسٹ میچ کیلئے بھی کراچی ٹیسٹ الیون کو برقرار رکھا اور ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا مگر پہلی تین وکٹیں 30 رنز کے مجموعی سکور سے قبل ہی گر گئیں جس کے بعد کپتان بابر اعظم اور فواد عالم نے ٹیم کو سہارا دیا اور پہلے روز کھیل ختم ہونے تک 145 رنز بنائے تاہم دوسرے روز کے کھیل کے آغاز پر دونوں ہی کھلاڑی آوٹ ہو گئے ، بابراعظم 77 جبکہ فواد عالم 45 رنز کے ساتھ پولین لوٹ گئے۔

یاد رہے کہ چیف سلیکٹر محمد وسیم نے جنوبی افریقہ سے سیریز کیلئے 20رکنی ابتدائی سکواڈ میں ملکی سطح کے مقابلوں میں عمدہ کارکردگی دکھانے والے کرکٹرز کا انتخاب کرکے خوب داد سمیٹی تھی، ان میں عمران بٹ، عبداللہ شفیق، کامران غلام، سلمان علی آغا، سعود شکیل، نعمان علی، ساجد خان، تابش خان اور حارث رﺅف شامل تھے، 9کرکٹرز میں سے عبداللہ شفیق، کامران غلام اور سلمان علی آغا کو تو پہلے ہی 17رکنی سکواڈ سے باہر کردیا گیا تھا۔

دوسرے ٹیسٹ سے قبل بھی سکواڈ برقرار رکھنے کا رسمی اعلان کرنے کے بعد پلیئنگ الیون میں بھی کوئی تبدیلی نہیں کی گئی، یوں صرف عمران بٹ اور نعمان علی کو ہی دونوں ٹیسٹ کھیلنے کا موقع ملا، دیگر 7 کھلاڑی انتظار کرتے رہ گئے، 17 رکنی سکواڈ میں شامل محمد نواز اور سرفراز احمد بھی پانی پلانے تک محدود رہے۔

مزید :

کھیل -