لاپتہ افراد کے بارے میں کمیٹی کی سفارشات آئندہ ہفتے پارلیمنٹ میں پیش ہونگی

لاپتہ افراد کے بارے میں کمیٹی کی سفارشات آئندہ ہفتے پارلیمنٹ میں پیش ہونگی

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی سلامتی کمیٹی کے چیئرمین سینیٹر رضا ربانی نے کہا ہے کہ لاپتہ افراد کے بارے میں کمیٹی کی سفارشات آئندہ ہفتے پارلیمنٹ میں پیش کردی جائیں گی۔ قومی سلامتی کے اجلاس کے بعد رضا ربانی نے بتایا کہ اجلاس میں افراسیاب خٹک، مشاہد حسین اور مولانا فضل الرحمان نے شرکت کی جبکہ آفتاب شیرپاﺅاور ایم کیو ایم کے اراکین اجلاس میں شریک نہیں ہوئے۔رضا ربانی نے بتایا کہ سفارشات میں لاپتہ افراد کے لواحقین کی آرا ءکو بھی مدنظر رکھا گیا ہے۔ اے آر وائی نیوز کے مطابق لاپتہ افراد کے معاملے میں کمیٹی نے دس سے زائد سفارشات پیش کی ہیں۔ ان کے مطابق حراست میں لیے گئے افراد کے لواحقین کو آگاہ کرنا اور ان سے ملاقاتیں کرانا لازم ہوگا۔ ملزم کی وکیل تک رسائی بھی لازم قرار دی گئی ہے۔ کسی بھی زیر حراست شخص کو زیادہ سے زیادہ تین ماہ تک حراست میں رکھا جاسکے گا۔ اکیس دنوں میں تحقیقات مکمل کرکے عدالت میں چالان پیش کرنا لازم ہوگا۔ اس کے علاوہ کسی شخص کو حراست میں لیتے وقت متعلقہ ایس ایچ او کو آگاہ کرنا بھی ضروری قرار دیا گیا ہے۔ سینیٹر رضا ربانی کا کہنا تھا کہ لاپتہ افراد کے بارے میں قومی سلامتی کمیٹی کے سفارشات پر حکومت کو عمل کرنا ہوگا۔

مزید :

قومی -