شیخ النمر کے خلاف کیا کیا الزامات تھے اور کس جرم میں سزا سنائی گئی؟ تفصیلات جاری کردی گئیں

شیخ النمر کے خلاف کیا کیا الزامات تھے اور کس جرم میں سزا سنائی گئی؟ تفصیلات ...
شیخ النمر کے خلاف کیا کیا الزامات تھے اور کس جرم میں سزا سنائی گئی؟ تفصیلات جاری کردی گئیں

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں شیعہ سکالر شیخ نمر بکر النمر کی سزائے موت کے بعد ایران میں شدید احتجاج جاری ہے اور شیخ النمر کی پھانسی کو بلا جواز اور خلاف قانون قرار دے کر اس کی شدید مذمت کی جارہی ہے۔ دوسری جانب سعودی عرب میں شیخ النمر کے خلاف الزامات کی طویل فہرست جاری کی گی ہے، جن میں دہشتگردوں کی حمایت اور ریاست کے خلاف بغاوت جیسے الزامات بھی شامل ہیں، جن کی بناءپر سزائے موت سنائی گئی۔

نیوز سائٹ ’عرب نیوز‘ کے مطابق شیخ النمر العوامیہ کی امام حسین مسجد میں 2002ءسے خطبات دے رہے تھے، تاہم ان کی تقاریر رفتہ رفتہ سیاسی ہوتی چلی گئیں اور ان میں متعدد ایسی باتیں کی گئیں جنہیں سعودی ریاست نے قانون کی سنگین ترین خلاف ورزی قرار دیا۔ نیوز سائٹ کے مطابق مارچ 2009ءمیں شیخ النمر نے سعودی حکام پر تنقید کرتے ہوئے شیعہ علاقوں کو علیحدہ کرکے الگ ریاست بنانے کی تجویز دی۔ بحرین میں حکومت کے خلاف احتجاجی تحریک کے دوران انہوں نے بحرین سے خلیجی افواج نکالنے کا مطالبہ کیا اور بحرینی حکومت کو بھی سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔

مزید جانئے: سعودی دولہے نے فٹ بال میچ کیلئے شادی ملتوی کردی، دلہن کے باپ کا رشتے سے ہی انکار

اکتوبر 2011ءمیں انہوں نے سعودی سیکیورٹی حکام کو ظالم و جابر قرار دیا اور سعودی میڈیا اور حکومت پر ان کی پردہ پوشی کا الزام لگایا۔ انہوں نے اعلیٰ سعودی حکام کی تقرری پر بھی اعتراضات کئے اور حکومت پر اس معاملے میں بھی سخت ترین تنقید کی۔ شیخ النمر نے سعودی عرب میں متحدہ مذہبی اپوزیشن کے قیام کا مطالبہ بھی کیا جبکہ سعودی حکومت کو بے گناہ شیعہ افراد کے قتل کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے حکومت کے خلاف عوام کو اٹھ کھڑے ہونے کے لئے کہا۔ انہیں مملکت کے مشرقی خطے میں عدم استحکام پھیلانے والا خطرناک ترین فرد قرار دیا گیا، جبکہ سیکیورٹی فورسز کے ساتھ برسرپیکار دہشتگردوں کی حمایت کا مرتکب بھی قرار دیا گیا، اور ان جرائم کی پاداش میں 15 اکتوبر 2014ءکو انہیں سزائے موت سنائی گئی تھی۔

شیخ النمر 1959ءمیں صوبہ قطیف کے شہر العوامیہ میں پیدا ہوئے تھے۔ وہ 10 سال تک ایران میں حوضہ علمی پروگرام سے بھی منسلک رہے۔ ان کی اہلیہ 2012ءمیں کینسر کے باعث وفات پاچکی ہیں۔ عرب نیوز کے مطابق انہیں سرکاری خرچے پر علاج کے لئے امریکا لیجایا گیا تھا، مگر وہ جانبر نہ ہوسکیں۔

مزید : بین الاقوامی