وہ جگہ جہاں دن میں آسمان لال اور غروب آفتاب کے وقت نیلا ہوتا ہے

وہ جگہ جہاں دن میں آسمان لال اور غروب آفتاب کے وقت نیلا ہوتا ہے
وہ جگہ جہاں دن میں آسمان لال اور غروب آفتاب کے وقت نیلا ہوتا ہے

  

واشنگٹن (نیوز ڈیسک)قدرت نے ہماری کائنات کو ایک ایسا حیرت کدہ بنایا ہے کہ اس کے جس پہلو کو بھی دیکھیں عقل دنگ رہ جاتی ہے۔ زمین پر ہم نیلے آسمان سے مانوس ہیں لیکن فلکیات دانوں نے انکشاف کیا ہے کہ مریخ کا معاملہ بہت ہی مختلف اور حیرت انگیز ہے ۔ NBC نیوز کے مطابق یونیورسٹی آف ایریزونا کے ماہر فلکیات مارک لیمون کا کہنا ہے کہ مریخ ایک ایسی نرالی جگہ ہے کہ جہاں دن کے وقت آسمان لال نظر آتا ہے لیکن غروب آفتاب کے وقت اس کا رنگ نیلا ہوجاتا ہے۔

مزید جانئے: وہ علاقہ جہاں مذہب کے نام پر نوجوان لڑکیوں کو جسم فروشی پر مجبور کردیا جاتا ہے

انہوں نے بتایا کہ مریخ کے گرد موجود گرد میں آئرن آکسائیڈ کی موجودگی کی وجہ سے جب دن کے وقت سورج کی کرنیں اس میں سے گزرتی ہیں تو لال طول موج کی روشنی زیادہ منتشر ہوتی ہے جس کی وجہ سے آسمان لال دکھائی دیتا ہے۔ غروب آفتاب کے وقت سورج کی کرنیں اس زاویے سے پڑتی ہیں کہ افق کے نزدیک نظر آنے والی گرد سورج کے اطراف میں نیلے رنگ کا حالہ بنادیتی ہے جس کی وجہ سے سارا افق نیلگوں نظر آتا ہے۔

ماہرین فلکیات کا کہنا ہے کہ خلاءکے دیگر حصوں میں بھی انعطاف نور کے مختلف مظاہر نظر آتے ہیں مگر مریخ ایک ایسی جگہ ہے جہاں دن کے وقت لال آسمان اور غروب آفتاب کے وقت نیلا آسمان بہت واضح طور پر دکھائی دیتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس