سرمایہ کاری میں اضافہ کے لئے انقلابی اقدامات کی ضرورت ہے: افتخار علی ملک

سرمایہ کاری میں اضافہ کے لئے انقلابی اقدامات کی ضرورت ہے: افتخار علی ملک

اسلام آباد (اے پی پی) یونائیٹڈ بزنس گروپ کے چئیرمین اور سارک چیمبر کے نائب صدر افتخار علی ملک نے کہا ہے کہ پائیدار ترقی یقینی بنانے، بے روزگاری کے خاتمے اور ملکی آبادی کو صحت، تعلیم، ٹرانسپورٹ، رہائش اور دیگر سہولیات کی ارزاں فراہمی کیلئے اگلے دس سال تک شرح نمو میں کم از کم 70 فیصد اضافہ ضروری ہے۔ جی ڈی پی میں اضافہ کیلئے سرمایہ کاری میں 25 فیصد اضافہ لازمی ہے جس کے لئے انقلابی اقدامات کی ضرورت ہے۔ ہمیں وزیراعظم نواز شریف اور وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے اکنامک وژن پر پورا اعتماد ہے جس سے ملکی مسائل جلد حل ہو جائیں گے۔ افتخار علی ملک نے ایف پی سی سی آئی کے صدر عبدالرؤف عالم، اسلام آباد چیمبر کے صدر عاطف اکرام شیخ، ملک سہیل، اسلام آباد ویمن چیمبر کی بانی صدرثمینہ فاضل اور اٹک چیمبر کے سابق صدر تیمور اسلم سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ برآمدات کم ہو رہی ہیں جبکہ ٹیکس، سرمایہ کاری اور قومی بچت جمود کا شکار ہے جسے بڑھانے کیلئے اقدامات کی ضرورت ہے۔برامدات میں کمی کا سبب ایکسپورٹ مارکیٹوں میں کساد بازاری ہے جبکہ قومی بچت میں جمود کی وجہ کھاتہ دارون کو ملنے والامنفی منافع ہے۔

ٹیکس سسٹم میں اصلاحات ضروری ہیں جبکہ موجودہ ٹیکس ایمنسٹی سکیم اسکی جانب اہم قدم ہے۔ افتخار علی ملک نے کہا کہ پاکستان سمیت سارک ممالک کی ترقی اور غربت کے خاتمہ کیلئے پالیسیاں بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔اس سے ہم اس خطہ سے دنیا کی نصف پیداوار فراہم کر کے اپنی عوام کو یورپ کا معیار زندگی فراہم کر سکتے ہیں۔ دنیا کی 22 فیصد آبادی والے خطے جس میں سے 45 فیصد نوجوان ہیں کا ترقی پزیر ہونا حیران کن ہے۔ افتخار ملک نے کہا کہ ہم وسائل سے مالا مال ہیں دنیا کا سب سے بڑا بلاک ہیں مگر ہماری باہمی تجارت دنیا میں سب سے کم ہے۔ سارک میں ایک کروڑ سے زیادہ کاروبار ہیں مگربرامدات دنیا کی کل برامدات کا ڈیڑھ فیصد ہیں جنہیں بہتر بنانے کیلئے سیاسی عزم اور پالیسیوں میں تبدیلی ضروری ہے جس سے ایک نئے دور کا آغاز ہو گا۔اس خطہ میں درامدات اور برامدات کی لاگت دنیا میں سب سے زیادہ ہے۔ اگر حساس فہرستوں کا معاملہ نمٹا دیا جائے تو تمام سارک ممالک کی معیشت تیزی سے ترقی کرے گی۔

مزید : کامرس