پنجاب حکومت کی صحت کی جانب کوئی توجہ نہیں، محمودالرشید

پنجاب حکومت کی صحت کی جانب کوئی توجہ نہیں، محمودالرشید

لاہور( نمائندہ خصوصی)پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمودالرشید نے کہا کہ پنجاب حکومت کی تمام تر توجہ غیر ضروری منصوبوں پر ہے صحت کی جانب کوئی توجہ نہیں عالم یہ ہے کہ پنجاب کا کوئی وزیر صحت ہی نہیں، انہوں نے کہا کہ میو ہسپتال پنجاب کا بڑا ہسپتال ہے یہاں ایم آر آئی مشین نہیں، ایک سی ٹی سکین سے جانیں بچانا ممکن نہیں،سرکاری ہسپتالوں میں بیڈ نہیں،جان بچانے والی ادویات ہیں نہ مشینیں اور تمام صوبائی وسائل غیر ضروری منصوبوں پر خرچ کئے جا رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے گزشتہ رو ز لاہور کے میو ہسپتال کے دورہ کے موقع پر کیا۔اے ایم ایس اور مریضوں سے ملاقات کی، اس موقع پر مریضوں اور انکے لواحقین کی بڑی تعداد نے شکایات کے انبار لگا دیئے۔ قائد حزب اختلاف نے ایمرجنسی، آؤٹ ڈرو اور مختلف وارڈوں کا دورہ کیا۔ بعد ازاں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پچھلے 8سالوں سے سرجیکل ٹاور کی تعمیر کا منصوبہ زیر التواء ہے، فنڈز کی عدم فراہمی اور ہسپتال میں بیڈز کی کمی کے باعث مریضوں کو شدید دشواری کا سامنا ہے، ایک بیڈ پر دو، دو اور کہیں تین مریض لیٹے ہیں، پنجاب حکومت نہ جانے پیسہ کہاں خرچ کر رہی ہے۔ میاں محمودالرشید کا مزید کہنا تھا کہ پنجاب حکومت نے صحت کے شعبے کیلئے 166ارب13کروڑ روپے مختص کئے ،ہسپتالوں میں جان بچانے والی ادویہ اور آلات کی فراہمی کیلئے 10ارب 82 کروڑ روپے مختص کئے لیکن عوام کو علاج کی بہترین سہولیات ملیں نہ ہسپتالوں کو ضروری آلات کی فراہمی یقینی بنائی گئی ۔

محمودالرشید

مزید : علاقائی