سخت ڈیوٹی یا خانگی مسائل‘ 45 سالہ کانسٹیبل دل کے دورے سے جاں بحق

سخت ڈیوٹی یا خانگی مسائل‘ 45 سالہ کانسٹیبل دل کے دورے سے جاں بحق

ملتان(کرائم رپورٹر) سخت ڈیوٹیوں افسران کی ڈانٹ ڈپٹ یا خاندانی مسائل؟ گزشتہ روز کپ تھانہ میں تعینات کانسٹیبل 45سالہ عبدالرزاق دل کا دورہ پڑنے سے جاں بحق ہوگیا۔بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ روز عبدالزاق جو کہ تھانے کی ڈاک لے کر پولیس لائن ایس ایس پی آپریشن کے دفتر پہنچا ابھی (بقیہ نمبر6صفحہ12پر )

موٹر سائیکل سے اترا ہی تھا کہ بے ہوش ہو کر نیچے گر پڑا،جس پر ساتھی اہلکاروں نے اسے فوری طور پر اٹھا کر نشتر ہسپتال منتقل کیاتاہم وہ جانبر نہ ہوسکا،مرحوم کے4بچے ہیں اگر پچھلے دو ماہ کاجائزہ لیا جائے تو 2ماہ کے دوران 5کانسٹیبل دوران ڈیوٹی دل کا دورہ پڑنے کے باعث جاں بحق ہوگئے۔اس حوالے سے پولیس کانسٹیبلان کا کہنا ہے کہ وہ پولیس کے ایک ادنیٰ سے ملازم ہیں تھانیدار ،ایس ایچ او ،ڈی ایس پی ایس پی یہاں تک کہ سی پی او تک اعلیٰ افسران کا ڈر انہیں ذہنی دباؤ کا شکار بنا رہا ہے ،پولیس میں سزا کا نظام باقی محکموں کی نسبت سب سے زیادہ ہے۔سزا سے بچنے کے لیے سخت ڈیوٹی کے باعث بلڈ پریشر سمیت دیگر عارضوں میں مبتلا ہورہے ہیں۔اگر وہ ڈیوٹی انجام نہ دیں تو انہیں فوری طور پر معطل کردیا جاتا ہے گزشتہ دو ماہ کے دوران دوران ڈیوٹی جاں بحق ہونیوالے اہلکاروں میں نیو ملتان کو کانسٹیبل ساجد تھہیم،شاہ رکن عالم کاعظیم اور تھانہ گلگشت کاطالب حسین اور گزشتہ روز کپ تھانے میں تعینات کانسٹیبل عبدالرزاق شامل ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...