تیمرگرہ ،دیر پائیں میں پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے عملہ کا احتجاجی مظاہرہ

تیمرگرہ ،دیر پائیں میں پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے عملہ کا احتجاجی مظاہرہ

تیمرگرہ (بیور ورپور ٹ ) جماعت پنجم جائزہ امتحان اور صوبائی حکومت کی طرف سے پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے خلاف پنجم امتحان سے بائیکایٹ کی صورت میں ممکنہ کاروائی کے خلاف دیر پائین کے پرائیوٹ تعلیمی اداروں نے تیمرگرہ پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرین نے صوبائی حکومت کے خلاف نعرہ بازی کی بعدازاں پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک خیبر پختونخوا کے سینئر نائب صدر امجد علی،پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک دیر لوئر کے صدر عبدالودود،گل اسلام خان،سجاد حیات،اختر گل،سردار علی،فضل ربی،محمد زمان اور ولایت محمد نے صوبائی حکومت پر واضح کیا کہ حکومت تعلیمی میدان میں اپنے فعال پارٹنر نجی تعلیمی اداروں کو دیوار سے لگانے کی پالیسی پر گامزن ہے صوبائی حکومت صرف پنجم اسسمنٹ امتحان کو بہانہ بنا کر پرائیویٹ تعلیمی اداروں کو ختم کرنے کی کوشش کررہی ہے لیکن صوبائی حکومت کی ہر سازش کو بے نقاب کیا جائے گاانھوں نے کہا کہ نجی تعلیمی ادارے متحد ہیں اور صوبائی حکومت کے ہر غیر قانونی اقدام کے خلاف بھرپور مزاحمت کی جائے گی انھوں نے مزید کہا کہ جماعت پنجم امتحان صرف وقت کا ضیاع ہے اس سے حکومت کے کروڑوں روپے فضول خرچ ہوں گے اور طلبہ وطالبات کو کچھ حاصل نہیں ہوگا جبکہ حکومتی خزانے اور تعلیمی بورڈز پر اضافی بوجھ ائے گا حکومت اگر اپنے تعلیمی یا امتحانی نظام کا اسسمنٹ کرانا ضروری سمجھتی ہے تو پورے صوبے میں خاص سکولز کو ٹارگٹ کرئے اور جائزہ لیں انھوں نے صوبائی حکومت اور سیکرٹری تعلیم کی طرف سے باربار پرائیویٹ تعلیمی اداروں کو دھمکی آمیز نوٹس بھیجنے کی پرزور مذمت کی اور واضح کیا کہ حکومت سالانہ اربوں روپے خرچ کرکے معیاری تعلیم کے فروغ میں ناکام ہوچکی ہے جبکہ پرائیویٹ سیکٹر اپنی مددآپ کے تحت معیاری تعلیم کو فروغ دے رہا ہے حکومت اور تعلیمی بورڈز پرائیویٹ سیکٹر کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کررہی ہے انھوں نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ حکومت نے پرائیویٹ تعلیمی اداروں کو ایک سازش کے تحت ستوری دہ پختونخوا،ٹیلنٹ سکالر شپ اور پرائم منسٹر لیپ ٹاپ سکیم جیسی سہولیات سے محروم رکھا ہے تاکہ عوام کا اعتماد پرائیویٹ سیکٹر پر متززل کیا جاسکے انھوں نے کہا کہ عوام جان چکے ہیں کہ پرائیویٹ سیکٹر ہمارے بچوں کے روشن مستقبل کا ضامن ہے انھوں نے دھمکی دی کہ اگر صوبائی حکومت یا بورڈز کی طرف سے پرائیویٹ سیکٹر کے خلاف کوئی کاروائی کی گئی تو کورٹ سے رجوع کرکے حکومتی مذموم عزائم کو ناکام بنا دینگے#

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...