ڈیم فنڈز کے9ارب روپے بلوچستان میں آبی منصوبوں کیلئے استعمال کئے جائیں ،سینیٹرز

ڈیم فنڈز کے9ارب روپے بلوچستان میں آبی منصوبوں کیلئے استعمال کئے جائیں ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے منصوبہ بندی و ترقی نے ڈیم فنڈز میں دیامر بھاشا اور مہمند ڈیمز کی تعمیر کیلئے جمع ہونیوالے 9 ارب روپے کی رقم کو بلوچستان میں چھوٹے ڈیمزکی تعمیر میں استعمال کرنے کا مطالبہ کردیا۔(بقیہ نمبر22صفحہ12پر )

ایک رپورٹ کے مطابق سینیٹر آغا شاہ زیب درانی کے زیر صدارت سینیٹ کی قائمہ برائے منصوبہ بندی و ترقی کا اجلاس منعقد ہوا جس میں کمیٹی نے وفاقی حکومت سے بلوچستان میں چھوٹے اور درمیانے ڈیموں کی تعداد ایک سو سے بڑھا کر 5 سو کرنے کا مطالبہ بھی کردیا۔صوبہ بلوچستان کے سینیٹرز نے درخواست کی دیامر بھاشا ڈیم کی تعمیر میں ایک کھرب 40 ارب اور مہمند ڈیم کی تعمیر میں 3 سو 10 ارب روپے لاگت آئے گی جو ڈیم فنڈز مہم سے جمع کیے گئے 7 سے 8 ارب روپے میں تعمیر نہیں کیے جاسکتے لیکن اس رقم کو بلوچستان میں چھوٹے اور درمیانے درجے کے ڈیمز بنانے میں استعمال کیا جاسکتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ان ڈیموں کی تعمیر سے صوبے میں پانی کے مسائل کافی حد تک حل کرنے میں مدد ملے گی۔سینیٹر عثمان کاکڑ نے کہا کہ ’آپ عوام کی جانب سے عطیہ کیے گئے 7 سے 8 ارب روپے کی مدد سے ایک بڑا ڈیم تعمیر نہیں کرسکتے لیکن یہ رقم بلوچستان میں پانی کے مسائل کو حل کرنے میں اہم کردار ادا کرسکتی ہے‘۔صوبہ بلوچستان کے دیگر سینیٹرز نے بھی ان کے مطالبے کی حمایت کی اور پلاننگ کمیشن نے مذکورہ معاملہ متعلقہ فورمز میں پیش کرنے کا مطالبہ بھی کردیا۔بعد ازاں کمیٹی نے وزیر برائے منصوبہ بندی کو آئندہ 5 سال میں بلوچستان میں چھوٹے ڈیموں کی موجودہ تعداد کو ایک سو سے 5 سو کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔قائمہ کمیٹی نے وزیر برائے منصوبہ بندی سے بلوچستان میں ایک سو چھوٹے ڈیموں کے منصوبے میں غیر تعمیر شد ڈیمز کی تعمیر ایک ارب 20 کروڑ روپے فوری طور پر جاری کرنے کی ہدایات جاری کردیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...