ترکی سے دو طرفہ تجارتی حجم بڑھانے کا اعلان خوش آئند ‘فرنیچرکونسل

ترکی سے دو طرفہ تجارتی حجم بڑھانے کا اعلان خوش آئند ‘فرنیچرکونسل

لاہور( نیوز رپورٹر ) پاکستان فرنیچر کونسل (پی ایف سی) کے چیف ایگزیکٹو میاں کاشف اشفاق نے پاکستان اور ترکی کے درمیان دو طرفہ تجارتی حجم کو بلند ترین سطح پر لے جانے کے وزیراعظم عمران خان کے بیان کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان تجارت کے فروغ کے وسیع مواقع موجود ہیں جس کیلئے فریقین کو معاشی تعاون کے فروغ کا میکانیزم تیار کرنے کی ضرورت ہے۔ جمعہ کو اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ علاقائی اور بین الاقوامی معاملات پر پاکستان اور ترکی یکساں خیالات رکھتے ہیں اور دو طرفہ تعلقات کے فروغ کے لئے بہت بڑی گنجائش موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ترکی کے درمیان انتہائی قریبی تعلقات قائم ہیں جو وقت کے ساتھ مضبوط ترین ہوتے جا رہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کے دورہ ترکی سے بڑی امیدیں وابستہ ہیں۔ تجارت اور سرمایہ کاری، خاص طور پر فرنیچر کے سیکٹر میں تعاون کے نئے موقع تلاش کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ پاکستان کے ہاتھ سے تیار فرنیچر کی بین الاقوامی مارکیٹوں میں بہت زیادہ مانگ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ترکی پاکستانی برآمد کنندگان کو اپنی مصنوعات کو یورپی منڈیوں میں مارکیٹ کرنے کے لئے مواقع فراہم کرسکتا ہے۔ ترک کمپنیاں یورپی صارفین کے لئے جدید ترین مشینوں پر مہنگا اور اعلی معیار کا فرنیچر تیار کرتی ہیں جبکہ وہ پاکستان کا ہاتھ سے تیار کردہ اعلیٰ کوالٹی فرنیچر مشترکہ طور پر مارکیٹ کر سکتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں زیادہ تر فرنیچر ہاتھ سے تیار ہوتا ہے اور کم قیمت ہونے کی وجہ سے اس کی یورپی یونین کے ممالک میں اعلی قیمت پر مارکیٹنگ کی جا سکتی ہے

جبکہ ترکی پاکستانی کمپنیوں کو مارکیٹ تک براہ راست رسائی کی سہولت دینے میں بھی اہم کردار ادا کر سکتا ہے۔ میاں کاشف نے کہا کہ ترکی کے ساتھ جوائنٹ وینچرز کے ذریعے پاکستانی فرنیچر انڈسٹری کیلئے جدید مشینری کی فراہمی ممکن ہے جس سے پاکستانی فرنیچر مصنوعات کے معیار کو عالمی سٹینڈرڈ تک لایا جا سکتا ہے۔ ہمارے فرنیچر سیکٹر کو کاٹیج انڈسٹری سے جدید انڈسٹری کا درجہ دینے اور ماہر لیبر کی تیاری کیلئے انہیں جدید مشینری کے استعمال کی تربیت دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین تجارتی حجم میں اضافہ اور آزاد تجارتی معاہدے کی ضرورت ہے جس پر اس وقت کام جاری ہے۔ #/s#

مزید : کامرس


loading...