اپوزیشن پر کرپشن کے سنگین مقدمات ، ان کی چیخ وپکارفطری امر ہے ،علی محمد خان

اپوزیشن پر کرپشن کے سنگین مقدمات ، ان کی چیخ وپکارفطری امر ہے ،علی محمد خان

چارسدہ (بیو رو رپورٹ) وفاقی وزیر علی محمد خان نے کہا ہے کہ وزیر اعظم سٹیزن پورٹل سسٹم کے ذریعے عوام کو ان کے دہلیز پر انصاف مل رہا ہے ۔ جمہوری نظام میں پارلیمنٹ کا بنیادی کردار ہو تا ہے ۔ اپو زیشن پر کرپشن کے سنگین مقدمات چل رہے ہیں اسلئے ان کی چیخ و پکار فطری امر ہے۔ ۔ میاں نوا ز شریف سے پوچھا جا ئے کہ ای سی ایل سے جنرل مشرف کا نام کیو ں نکالا ۔ موجودہ حکومت کو پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ سے ساری مصیبتیں ورثے میں ملی ہے ۔ وہ ڈپٹی کمشنر چارسدہ کے دفتر میں وزیر اعظم پاکستان سٹیزن پورٹل کے شکایت کنندہ گان سے بل مشافہ ملاقات اور شکایات حل کرنے کے بعد چارسدہ پریس کلب کے صحافیوں سے بات چیت کر رہے تھے ۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر چارسدہ عدیل شاہ ، ڈی پی او چارسدہ عرفان اللہ خان اور دیگر ضلعی افسران بھی موجود تھے ۔ وفاقی وزیر پارلیمانی امور علی محمد خان نے کہا کہ جب پارلیمان مضبوط ہو گی تو جمہوری سسٹم ڈیلیور کریگی۔ تحریک انصاف نے روز اول سے پارلیمنٹ کو بہتر طریقے سے چلانے کی کوشش کی ہے۔سپیکر اسد قیصر کے بیرون ملک دورے سے واپسی پر باقی ماندہ پارلیمانی کمیٹیاں بن جائیگی اور امید ہے کہ پارلیمان کا ماحول آہستہ آہستہ بہتر ہو جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ میاں نواز شریف اور آصف زرداری پر کرپشن کے سنگین الزامات ہیں اسلئے ان کی چیخ و پکار فطری امر ہے۔ اپوزیشن کی جانب سے سخت باتیں ہونگی لیکن ہم نے برداشت کرنا ہے۔ نیب کے تحقیقات پر عمران خان اثرانداز نہیں ہونگے۔ زیادہ تر نیب کے کیسز نواز دور میں بنے۔ نیب چیئرمین نواز حکومت نے تعینات کیا ہے جس میں پیپلز پارٹی کی مشاورت شامل تھی ۔ عمران خان انتقامی سیاست کرتے ہیں اور نہ اس پر یقین رکھتے ہیں۔آئین سے مبرا کام کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ملک کو آئین کے مطابق چلانا چاہیے۔ میاں صاحب سے سوال بنتا ہے کہ مشرف کا نام ای سی ایل سے کیوں نکالا ہے۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ وہ اس بات سے اتفاق کرتے ہیں کہ معاشی حالات کچھ زیادہ ٹھیک نہیں مگر یہ بھی درست ہے کہ موجودہ حکومت کو پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ سے ساری مصیبتیں ورثے میں ملی ہے اور ہم یہ بوجھ کسی اور کے کندھے پر ڈالنے کی بجائے اسے حل کرنے کی کو شش میں ہے ۔معاشی بحران نواز اور زرداری کی غلط حکمرانی کا نتیجہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت مدت پورا کریگی تو کسی ملک سے قرضے کی ضرورت نہیں پڑیگی۔اگر پاکستان کو نہ لوٹا جاتا تو عمران خان آج چین کی بانسری بجاتے۔ آئین سے مبرا کوئی بھی نہیں اور نہ کسی کو آئین کی خلاف ورزی کا اختیار ہے۔بقہ حکومتوں کو مسائل کی ذمہ دار قرار دینے کی بجائے موجودہ حکومت تمام مسائل خوش اسلوبی سے حل کر رہی ہے ۔معاشی صورتحال بہت جلد بہتر ہو جائیگی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...