محکمہ مواصلات و تعمیر میں ورک چارج ملازمین کے نام پر کروڑوں روپے کی خوردبرد کا انکشاف

محکمہ مواصلات و تعمیر میں ورک چارج ملازمین کے نام پر کروڑوں روپے کی خوردبرد ...

لاہور(ارشدمحمود گھمن /سپیشل رپورٹر)محکمہ مواصلات و تعمیرات پنجاب کی جانب سے صوبہ بھر میں ورک چارج ملازمین کے نام پر قومی خزانہ سے 28کروڑ80لاکھ روپے سالانہ خوردبرد کرنے کا انکشاف ہواہے ۔مذکورہ محکمہ کے ایگزیکٹو انجینئر ز نے اپنے عزیزواقارب کو نوازنے کے لئے شناختی کارڈ حاصل کرکے 5ہزار اضافی ڈیلی ویجزورک چارج ملازمین بھرتی کرکے مبینہ طور پر قومی خزانہ سے کروڑوں روپے نکلوا کر آپس میں بندر بانٹ کرلئے۔تفصیلات کے مطابق ذرائع کا کہنا ہے کہ محکمہ مواصلات و تعمیرات پنجاب بھر کے 36اضلاع میں سٹرکوں اور بلڈنگزکی تعمیرات کی دیکھ بھال کیلئے ڈیلی ویجز پر ورک چارج بھرتی کئے جاتے ہیں ،جس کااختیار پنجاب بھر کے تعینات ایگزیکٹو انجینئرز کے پاس ہوتاہے،ذرائع نے مزید بتایا کہ پنجاب بھر کے 36اضلاع میں تعینات ایگزیکٹو انجینئرز نے اپنے من پسند ٹھیکیداروں اورماتحت عملہ و عزیزواقارب کے 18سال سے زائد عمر کے افراد کے شناختی کارڈ حاصل کرکے کرپشن کرنے کی نیت سے تقریبا 16ہزارافراد بھرتی کرلئے جس کی تنخواہ تقریبا15ہزار روپے ماہوار کے حساب سے 2کروڑ40لاکھ روپے ماہانہ قومی خزانہ سے اعلیٰ افسران کی مبینہ ملی بھگت سے نکلوا لئے جاتے ہیں۔ذرائع نے مزید بتایا کہ اینٹی کرپشن ،ڈپٹی کمشنر آفس اورڈسٹرکٹ اکاؤنٹس آفس کے عملہ کی بھی مبینہ طور پر ملی بھگت سے قومی خزانہ کو نقصان پہنچایا جارہاہے جبکہ اس حوالے سے محکمہ مواصلات و تعمیرات پنجاب کا کہنا ہے کہ پنجاب بھر میں ڈیلی ویجز پر ورک چارل ملازم بھرتی کئے جاتے ہیں مگر ابھی تک کوئی ایسی شکایات موصول نہیں ہوئی ہیں تاہم ریکارڈ چیک کرکے ذمہ دار افسروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

مزید : صفحہ آخر


loading...