قیمتی جائیدادیں رکھنے کے باوجود ٹیکس نہ دینے والوں کیخلاف کارروائی شروع

قیمتی جائیدادیں رکھنے کے باوجود ٹیکس نہ دینے والوں کیخلاف کارروائی شروع

لاہور (این این آئی) فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے قیمتی جائیدادیں رکھنے کے باوجود ٹیکس نہ دینے والوں کے خلاف کارروائی شروع کر دی ، دو کروڑ روپے سے زائد مالیت کی پراپرٹی والے 120شہریوں کو نوٹسز جاری کر دیئے گئے ۔ تفصیلات کے مطابق ایف بی آر نے دوکروڑ سے زائد مالیت کی پراپرٹی رکھنے والوں کو ٹیکس نیٹ میں شامل کرنے کیلئے کارروائی تیز کردی ہے ۔ ایف بی آر ہیڈکوارٹر نے 120 بڑے غیر رجسٹرڈ پراپرٹی مالکان کی فہرست ریجنل ٹیکس آفس لاہور کو بھجوائی تھی ۔جس پر ایف بی آر نے دو کروڑ روپے سے زائد مالیت کی پراپرٹی کے 120لاہوری مالکان کو نوٹسز جاری کر دیئے ہیں ۔

کارروائی شروع

لاہور (این این آئی )ایف بی آر نے کامران کیانی اور پیراگون کے ڈائریکٹر ندیم ضیاء کو فائنل شوکاز نوٹس جاری کردیئے ہیں ۔ذرائع کے مطابق ایف بی آر نے کامران کیانی اور پیراگون کے ڈائریکٹر ندیم ضیا کو ذاتی حیثیت میں طلبی کا حتمی شوکاز جاری کیا ہے۔ ایف بی آر ذرائع نے بتایا کہ کامران کیانی کو سال 2015 میں گوشوارے جمع نہ کرانے پر نوٹس جاری کیا گیا ہے۔کامران کیانی نے سال 2015 میں 33 کروڑ 60 لاکھ روپے کی پراپرٹی خریدی جبکہ ڈائریکٹر پیراگون ندیم ضیانے سال 2017 کا گوشوارہ جمع نہیں کرایا تھا ندیم ضیاسے سال 2015 ، 2016 کے دوران پراپرٹی کی خرید و فروخت کی تفصیلات طلب کی گئی تھیں۔ذرائع نے بتایا کہ ندیم ضیا نے سال 2017 میں 11 کروڑ 98 لاکھ کی پراپرٹی خریدی لیکن ایف بی آر کو ظاہر نہیں کی ۔ایف بی آر نے کامران کیانی اور ندیم ضیاکے گھروں پر طلبی کے نوٹسز چسپاں کئے تھے لیکن کامران کیانی ، ندیم ضیا نے ایف بی آر کو جواب جمع نہیں کروایا جس پر ایف بی آر نے کامران کیانی اور ڈائریکٹر پیراگون ندیم ضیاکو 9 جنوری کو طلب کر لیا ہے۔ایف بی آر ذرائع نے بتایا کہ کامران کیانی اور ندیم ضیاکو جواب جمع نہ کرانے پر یکطرفہ ٹیکس عائد کر دیا جائے گا ۔دریں اثنا ایف بی آ ر نے قیمتی جائیدادیں رکھنے کے باوجود ٹیکس نہ دینے والوں کے خلاف کارروائی شروع کردی دو کروڑ روپے سے زائد مالیت کی پراپرٹی کے 120 لاہوری مالکان کو ایف بی آر نے نوٹسز جاری کر دئیے ہیں۔ایف بی آر ہیڈکوارٹر نے 120 بڑے غیر رجسٹرڈ پراپرٹی مالکان کی فہرست ریجنل ٹیکس آفس کو بھجوائی تھی ایف بی آر نے دوکروڑ سے زائد مالیت کی پراپرٹی رکھنے والوں کو ٹیکس نیٹ میں شامل کرنے کیلئے کارروائی تیز کردی ہے۔

ایف بی آر

مزید : صفحہ آخر


loading...