ہیریٹیج فاونڈیشن عالمی ہیبیٹاٹ ایوارڈز 2018کی فاتح قرار

ہیریٹیج فاونڈیشن عالمی ہیبیٹاٹ ایوارڈز 2018کی فاتح قرار

کراچی (پ ر)کم لاگت سے تیار کردہ دھویں سے پاک چولہے کا پروگرام پاکستان کے دور دراز علاقوں میں خواتین کی صحت بہتر بنانے اور غربت کم کرنے میں مدد گار ثابت ہورہا ہے، اس ضمن میں مزکورہ پروگرام ورلڈ ہیبیٹاٹ ایوارڈ 2018 کا فاتح قرار پایا۔پاکستان چولہا: یہ چولہا نا صرف خواتین کو بااختیار بنا رہا ہے اور اُن کی زندگیوں کو تبدیل کررہا ہے بلکہ پسماندگی کا شکار طبقوں کو یہ بھی سکھا رہا ہے کہ کس طرح مٹی کی مدد سے ایک صحت بخش، پائیدار اور دھواں نا پیدا کرنے والے چولہا بنایا جائے جو ناصرف ان کے اپنے گھر کے لئے فائدہ مند ہو بلکہ دیگر گاوں دیہاتوں میں اس کی تشہیر اور پھر تعمیر کے زریعے روزگار بھی کمایا جاسکے۔یہ پروگرام ہیریٹیج فاونڈیشن آف پاکستان کی جانب سے چلایا جارہا ہے جس نے 35 دیہاتی کاروباری افراد یا بئیر فُٹ ولیج آنٹراپرینیورز (بی وی ایز) کو اس ساخت کا چولہا بنانے کی تربیت دی۔ بی وی ایز ماسٹر ٹرینر کے طور پر صرف 2 امریکی ڈالرز کے عوض دیگر خواتین کو بھی گارے، اینٹوں اور چونے سے مل بننے والے اس چولہے کی تیاری کا طریقہ بتارہے ہیں۔ اس سلسلے میں مزید 6 امریکی ڈالرز کا مٹیریل لگتا ہے اور یوں مجموعی طور پر 8 ڈالر کی لاگت سے چولہا تیار ہوجاتا ہے۔مزکورہ چولہا روایتی چولہوں کے مقابلے میں 50 سے 70 فیصد کم لکڑی جلاتا ہے جس سے نا صرف عمومی طور پر جنگلات کی کٹائی میں کمی واقع ہوتی ہے بلکہ اُن خواتین کی محنت بھی بچتی ہے جو لکڑیاں جمع کرنے پر معمور ہوتی ہیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...