وزیر اعظم کی کسی سے ذاتی لڑائی نہیں ، احتساب پر سمجھوتہ ووٹر سے غداری ہوگی :وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری

وزیر اعظم کی کسی سے ذاتی لڑائی نہیں ، احتساب پر سمجھوتہ ووٹر سے غداری ہوگی ...
وزیر اعظم کی کسی سے ذاتی لڑائی نہیں ، احتساب پر سمجھوتہ ووٹر سے غداری ہوگی :وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے کہاہے کہ احتساب پر سمجھوتہ ووٹر سے غدار ی ہوگی،2019میں ملک کومعاشی منزل کی طرف لے جانے کی کوشش کریں گے ، عمران خان کی کسی سے ذاتی لڑائی نے ، وزیر اعظم کی قیادت میں اداروں کی اصلاحات کر رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے فوادچودھری نے کہا کہ حکومت کی جانب سے جلد اصلاحات نظر آئیں گے ، گزشتہ کچھ عر صے سے تلخیوں میں گھر ے ہوئے ہیں، انہوں نے کہا کہ جب 23مارچ مناتے ہیں ، اس میں بھگت سنگھ کا ذکر بھی کرلیا کریں جسے یہاں پھانسی لگائی گئی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ ہم گھٹن کے ماحول میں رہتے ہیں اور 1980سے تلخیوں میں گھرے ہوئے ہیں، افغانستان پر حملہ ہم سے پوچھ کرنہیں کیا گیا تھا ، انہوں نے کہا کہ ملک ایک جسم کی مانند ہوتاہے ، پاکستان میں جس ادارے کو ہاتھ لگائیں پتہ چلتا ہے کہ نیچے سے کھوکھلا ہے ، عمران خان کی آصف زرداری یانواز شریف سے کوئی ذاتی لڑائی نہیں ہے ، الیکشن لڑ کر اداروں میں اپنے بندے بھرتی کرائے گئے ، ایم کیو ایم ، پیپلزپارٹی اورمسلم لیگ نے یہی کچھ کیاہے کہ اداروں میں اپنے بندے بھرتی کروائے ہیں جب اداروں میں اپنے بندے بٹھائے جائیں گے اور اداروں کو اپنا بزنس پارٹنر بنا لیا جائے گا تو پھر ادارے نیچے جائیں گے اوراب ایسا ہی ہواہے کہ ایسے اقداما ت سے ملک کو بے انتہا نقصان ہواہے، ادارے نیچے جائیں تو ملک ترقی نہیں کرتا ۔ انہوں نے کہا کہ جب عمران خان وزیر اعظم بنے تو پتہ چلا کہ معاملہ اس سے کہیں زیادہ گھمبیر ہے جس کا تحریک انصاف جلسوں میں تذکرہ کرتی رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سنبھالنے کے بعد ہم نے دوست ممالک کی مدد سے ادائیگیوں کا تواز ن درست کیا اور صنعت کی ترقی کیلئے اقدامات کئے ، وزیر اعظم نے فائر فائنٹنگ کی ، سعودی عرب ، یواے ای اورچائنہ گئے ۔

ان کا کہنا تھا کہ سیاست کے اندر کوئی ذاتی تلخیاں نہیں ہیں، آصف زرداری یا نوازشریف پر ایک بھی مقدمہ حکومت کا بنایا ہوا نہیں ہے اورنہ ایک ہی آفیسر جس نے ان مقدمات کی تفتیش کی ہو، ہمارا لگایا ہوا ہے ، نوازشریف اور آصف زرداری ایک دوسرے کا تحفظ کرتے رہے ، دونوں کا طریقہ کار ایک جیساہے ، دونوں نے جعلی کمپنیاں بنائیں، اب پکڑے گئے ہیں تو کہہ رہے ہیں کہ زیادتی کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ احتساب ہوگا کیونکہ ہمیں تو مینڈیٹ ہی اس کام کیلئے ملا ہے، منی لانڈرنگ کا معاملہ کیاہے؟ یہی لوگ اس کے ذمہ دارہیں، جو پکڑا جاتاہے ،وہ اسمبلی میں شفٹ ہوجاتا ہے ، اسمبلی کوایسے چلایا جا رہاہے جیسے وہ نیب پر بورڈ آف گورنر ہے ، وہاں لوگوں کے مسائل پر کوئی بات نہیں کی جاتی، یہ لوگ آتے ہیں اور اپنی باتیں کرکے چلے جاتے ہیں، تلخیوں کا سلسلہ فی الحال جاری رہے گا،وزیر اعظم کی کسی سے ذاتی لڑائی نہیں ہے ، اگر ہم احتساب پر سمجھوتہ کریں تے تو ہم ووٹر سے غداری کریں گے ۔

فواد چودھری کا کہنا تھا کہ پاکستان عمران خان کی قیادت میں ترقی کی جانب گامزن ہوگا ، آئندہ 6ماہ میں معیشت کی ترقی کیلئے اقدمات کئے جائیں گے ،2019میں ملک کو معاشی منزل کی جانب لے جانے کی کوشش کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری در آمدات کم ہورہی ہیں اوربیرون ملک پاکستانیوں کی جانب سے ترسیلات زر میں اضافہ ہو رہاہے ۔

مزید : اہم خبریں /قومی


loading...