بھارت کشمیر کھوچکا ، غیر ذمہ دارانہ بیانا ت سے خطے کا امن متاثر ہوسکتا ہے :وزیر خارجہ کا بھارتی کارروائی پرموثر جواب دینے کا اعلان

بھارت کشمیر کھوچکا ، غیر ذمہ دارانہ بیانا ت سے خطے کا امن متاثر ہوسکتا ہے ...
 بھارت کشمیر کھوچکا ، غیر ذمہ دارانہ بیانا ت سے خطے کا امن متاثر ہوسکتا ہے :وزیر خارجہ کا بھارتی کارروائی پرموثر جواب دینے کا اعلان

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاہے کہ بھارت کے غیر ذمہ دارانہ بیانات سے خطے کا امن متاثر ہوسکتا ہے ، بھارت کشمیر کھوچکا ہے ، ہمیں کسی کا خوف نہیں ، اپنی فوج پر مکمل اعتماد ہے ،بھارت نے کارروائی کی تو موثرجواب دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی نے کہا کہ ترکی کے ساتھ ہمارے دوستانہ مراسم ہیں ، وزیراعظم کادورہ ترکی انتہائی کامیاب رہاہے ، ترک قیادت سے بہت مفید ملاقاتیں ہوئی ہیں ، ہم ترکی کے ساتھ تجارت کا فروغ چاہتے ہیں، آئندہ پانچ برسوں میں ترکی کے ساتھ روڈ میپ بنائیں گے ، وزیر اعظم کی ون آن ون ملاقات کے بعد وفود کی سطح پربھی بات چیت ہوئی ۔ انہوں نے کہا کہ ترکی بزنس پاکستان کونسل کی نشست ہوئی ہے ، ترک صدر طیب رجب اردوان بہت جلد پاکستان آئیں گے اور ان کے ساتھ سرمایہ کاروں کا ایک وفد بھی آئے گا ، وزیر اعظم عمران خان کا دورہ ترکی مختصر لیکن جامع تھا ، دونوں ملکوں نے معاشی تعلقات کے فروغ پر اتفاق کیاہے ، دونوں ملکوں نے پانچ سالہ مشترکہ فریم ورک کے مسودے پر بھی اتفاق کیا ہے ،سرمایہ کاری اور باہمی تجارت کے مواقع تلاش کئے جائیں گے ، ترک قیادت نے فتح اللہ گولن کودہشت گرد قراردیاہے ، ترکی نے پاک ترک سکولوںپر پابندی کے پاکستان کے فیصلے کوسراہاہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم کی افغانستان کی بدلتی ہوئی صورتحال پر ترک ہم منصب سے بات چیت ہوئی ہے ، پاکستان اور ترکی نے علاقائی امور پر ایک دوسرے کاساتھ دیا ہے پاکستان ، افغانستان اور ترکی سہ فریق سمٹ کاانعقاد کریں گے ، ترکی سہ فریقی سمٹ کی میزبانی کرے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ابوظہبی کے ولی عہد محمد بن زیدکل پاکستان پہنچیں گے، یو اے ای پاکستان کے ساتھ سٹریٹیجک تعلقات بڑھانے کا ارادہ رکھتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حسین حقانی جن کی آغوش میں پلے تھے ان کو سب جانتے ہیں، حسین حقانی کا دامن اگر صاف ہے تو ان کو پاکستان آکرمقدمات کا سامنا کرنا چاہئے، امید ہے حسین حقانی کو انصاف ملے گا ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان اور صدر ٹرمپ کی ملاقات ہو سکتی ہے ،امریکہ کے رویے میں تبدیلی آئی ہے،امریکہ طالبان کے ساتھ مذاکرات کی میز پر آگیاہے ۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ آج بھارت کے اندر سے آوازیں اٹھ رہی ہیں، بھارت پروپیگنڈا کررہا ہے کہ سرجیکل سڑائیک کا ارادہ ہے ، میں بھارت کو پیغام دیناچاہتا ہوں کہ ہمیں کسی کا خوف نہیں اپنے عوام اور فوج کی یکجہتی پر مکمل اعتماد ہے ، ہمیں بھارت کے بیانا ت پر جوابی ردعمل دینے کی ضرورت نہیں، بھارت غیر ذمہ دارانہ بیانات دے رہاہے جن سے خطے کا امن متاثر ہوسکتا ہے ، عالمی برادری کوبھارتی بیانات کانوٹس لینا چاہئے، بھارت سرجیکل سڑائیک کے حوالے سے بے بنیاد گفتگو کررہاہے، پروپیگنڈا کیا جارہاہے کہ پاکستان سرجیکل سڑائیک کا ارادہ رکھتاہے ، پاکستان کے عزائم نہ کبھی جارحانہ تھے اور نہ ہونگے ۔انہوں نے کہا کہ بھارت نے کارروائی کی تو موثرجواب دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں، کشمیر کی صورتحال بڑی تیزی سے تبدیل ہورہی ہے ، بھارتی نفسیاتی طور پر کشمیر اور کشمیریوں کو کھو بیٹھا ہے ۔

مزید : اہم خبریں /قومی


loading...